امریکی حملے میں 'داعش' کا کیمیائی اسلحہ ساز ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکی سینٹرل کمانڈ کی جانب سے دعویٰ کیا گیا ہے کہ عراق کے شمالی شہر موصل میں گذشتہ ہفتے ایک فضائی حملے کے نتیجے میں دولت اسلامی "داعش" کا کیمیائی اسلحہ ساز ابو مالک ہلاک ہو گیا ہے۔

امریکی سینٹرل کمانڈ کے ایک بیان کے مطابق: "ابو مالک کو موصل میں 24 جنوری کو ایک فضائی حملے میں ہلاک کیا گیا۔ ابو مالک کوعراق کے مصلوب صدر صدام حسین کے دور حکومت کیمیائی ہتھیاروں کا ماہر تھا اور اس نے سابق صدر کو کیمیائی اسلحہ کی تیاری میں معاونت فراہم کی تھی۔ سنہ 2005ء میں وہ القاعدہ میں شامل ہوا۔ کچھ ہی عرصہ قبل اس نے داعش میں‌ شمولیت اختیار کی تھی۔"

واشنگٹن میں 'العربیہ' نے نامہ نگار نے بتایا ہے کہ امریکی حکام کی جانب سے ابو مالک کا اصل نام ظاہر نہیں‌ کیا گیا۔ وہ پندرہ سال تک صدام حکومت کے ساتھ وابستہ رہا اور المثیٰ کیمیکل اکیڈیمی میں کیمیائی ہتھیاروں کی تیاری میں‌ مصروف رہا۔

امریکی حکام نے توقع ظاہر کی ہے کہ ابو مالک کی ہلاکت سے داعش کو کیمیائی اور مہلک ہتھیاروں کی تیاری میں مشکل کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے جس کے نتیجے میں داعش کے ہاتھوں بے گناہ شہریوں کی اموت میں‌ بھی کمی آئے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں