سوشل میڈیا کی طاقت، برطانیہ نئی فوجی بریگیڈ بنانے پر مجبور

77 بریگیڈ اپریل سے قائم ہوگی، تینوں افواج کی نمائندگی ہو گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

برطانیہ نے نئے جنگی چیلنجوں سے نمٹنے اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کی ترقی سے فائدہ اٹھاتے ہوئے نفسیاتی جنگوں کے نئے محاذ پر لڑنے کے لیے ایک خصوصی فوجی بریگیڈ کی تشکیل کا فیصلہ کیا ہے۔

77 بریگیڈ کے نام سے مجوزہ طور پر تشکیل دی جانے والی یہ بریگیڈ باضابطہ طور پر ماہ اپریل میں قائم کی جائے گی۔ نئی فوجی بریگیڈ کا ہیڈ کوارٹر برکشائر کے علاقے ہرمیٹج میں ہو گا۔

اس برطانوی فوج کے جدید ترین بریگیڈ میں ریگولر فورسز کے علاوہ ریزرو فورسز سے بھی اہلکار شامل کیے جائیں گے، تاکہ بروئے کار فوجیوں کے علاوہ کمک کے طور پر کام آنے والا ایک جدید فوجی "آئی ٹی بیک اپ" بھی موجود رہے۔

برطانوی فوج کے سربراہ جنرل سر نک کارٹر کا کہنا ہے کہ "یہ بریگیڈ برطانیہ کی انفارمیشن ٹیکنالوجی کے حوالے سے جنگی صلاحیت کو بہتر بنائے گا اور روائتی صلاحیتوں سے زیادہ آگے تک دیکھنے کی استعداد کا حامل ہو گا۔"

واضح رہے اس نئے برطانوی یونٹ میں برطانوی بحریہ، فضائیہ اور فوج تینوں کی نمائندگی ہو گی، یوں یہ آئی ٹی کے میدان میں پیدا ہونے والی جنگی چیلنجوں سے نمٹنے کی ایک مربوط کوشش کے علاوہ برطانوی کے مربوط فوجی حکمت عملی کے اعتبار سے بھی ایک اہم پیش رفت ہو گی۔

اس بریگیڈ میں فوج سے باہر کے سویلین آئی ٹی ماہرین کی بھی خدمات بھی حاصل ہوں گی۔ برطانوی ماہرین سمجھتے ہیں کہ اس بریگیڈ کی تشکیل کے ذریعے غیر روائتی انداز عوامی رویوں پر بھی اثر انداز ہوا جا سکے گا کیونکہ غیر متشدد عناصر بھی جدید سوشل میڈیا کی وجہ سے جنگی حربوں کے تناظر میں اہمیت اختیار کر چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں