.

تیونس کی نئی مخلوط کابینہ کا اعلان

سیکولر جماعت کی قیادت میں کابینہ میں النہضہ کے وزراء شامل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

تیونس کے نامزد وزیراعظم حبیب الصید نے سوموار کو اپنی نئی مخلوط کابینہ کی فہرست پیش کردی ہے۔ان کی قیادت میں اس نئی کابینہ میں سیکولر جماعت نداتیونس کو برتری حاصل ہے اور اس میں اس کی سیاسی حریف اعتدال پسند اسلامی جماعت النہضہ کے وزراء کو بھی شامل کیا گیا ہے۔

نامزد وزیراعظم نے سوموار کو اپنے وزراء کی فہرست پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ ''ہم نے حکومت کی ہئیت ترکیبی کو وسیع البنیاد بنانے کے لیے تبدیلیاں کی ہیں اور اس میں دوسری جماعتوں سے تعلق رکھنے والے وزراء کو بھی شامل کیا ہے''۔

قبل ازیں النہضہ کے سربراہ راشد الغنوشی نے اتوار سیاسی حریف نداتیونس کی قیادت میں نئی مخلوط حکومت میں شمولیت پر آمادگی ظاہر کی تھی اور کہا تھا کہ ان کے درمیان اس سلسلے میں مفاہمت کی یادداشت طے پاگئی ہے۔النہضہ نے دھمکی دی تھی کہ اگر اس کے وزراء کو کابینہ میں شامل نہ کیا گیا تو وہ اس کو مسترد کردیں گے اور پارلیمان میں اس کے خلاف ووٹ دیں گے۔

گذشتہ ہفتے پارلیمان میں بڑی جماعتوں نے نامزد وزیراعظم حبیب الصید کی قیادت میں نئی کابینہ میں شامل بیشتر وزراء کو مسترد کردیا تھا جس کے بعد ندا تیونس اور النہضہ کے درمیان مخلوط حکومت کے قیام پر اتفاق راِئے ہوا ہے۔