.

تیونس:پارلیمان نے نئی کابینہ کی منظوری دے دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

تیونس کی پارلیمان نے سیکولر جماعت نداتیونس کی قیادت میں نئی مخلوط حکومت کی منظوری دے دی ہے۔

ایوان میں موجود دو سو چار ارکان میں سے ایک سو چھیاسٹھ نے وزیراعظم حبیب الصید کی جانب سے پیش کردہ وزراء کی فہرست کے حق میں ووٹ دیا ہے،تیس نے اس کی مخالفت کی ہے اور آٹھ ارکان رائے شماری کے وقت اجلاس سے غیرحاضر رہے ہیں۔

گذشتہ سال اکتوبر میں تیونس میں منعقدہ پارلیمانی انتخابات کے بعد معرض وجود میں آنے والی یہ پہلی حکومت ہے۔پارلیمان کے اسپیکر محمد النصور نے کابینہ کی منظوری کا خیرمقدم کیا ہے۔اس موقع پر وزیراعظم حبیب الصید نے کہا کہ ''اس حکومت کا ماٹو کام ،کام اور صرف کام ہوگا''۔

نداتیونس نے اکتوبر میں منعقدہ پارلیمانی انتخابات میں سب سے زیادہ نشستیں حاصل کی تھیں۔اس کو وزارت خارجہ سمیت چھے وزارتوں کے قلم دان سونپے گئے ہیں۔داخلہ ،دفاع اور انصاف کی وزارتیں آزاد امیدواروں کو دی گئی ہیں۔اسلامی جماعت النہضہ کے حصے میں وزارت محنت اورسیکریٹری آف اسٹیٹ کے تین عہدے آئے ہیں۔