.

یمن:حوثی باغیوں کا اقتدار پر قبضہ ،پارلیمان تحلیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں حوثی باغیوں نے اقتدار پر مکمل قبضہ کرلیا ہے،پارلیمان تحلیل کردی ہے اوربہت جلد ایک نئی عبوری اسمبلی کی تشکیل کا اعلان کیا ہے۔

جمعہ کو ٹیلی ویژن سے نشر کیے گئے ایک بیان میں حوثی باغیوں کی جانب سے کہا گیا ہے کہ نئی اسمبلی پانچ ارکان پر مشتمل عبوری صدارتی کونسل کا انتخاب کرے گی جو دو سال کے لیے عبوری حکومت چلائے گی۔

حوثی باغیوں نے یہ اعلان دارالحکومت صنعا میں صدارتی محل سے کیے ہیں ،اس موقع پر سابق وزیرداخلہ اور وزیردفاع سمیت متعدد سیاست دان بھی موجود تھے جو اس بات کا اشارہ ہے کہ حوثی باغیوں کو بعض دوسرے سیاسی دھڑوں کی بھی حمایت حاصل ہے۔

یمن میں گذشتہ ماہ صدر عبد ربہ منصور ہادی اور وزیراعظم خالد بحاح کے مستعفی ہونے کے بعد سے حکومت کا بحران جاری ہے۔حوثی باغیوں نے صدارتی محل پر قبضہ کررکھا ہے جبکہ مستعفی صدر کو ان کی رہائش گاہ تک محدود کردیا ہے۔

حوثی باغی اب بحران کے حل کے لیے مختلف سیاسی دھڑوں سے بات چیت کررہے ہیں۔انھوں نے ملک کے سیاسی دھڑوں کو بدھ تک بحران کے کسی حل پر اتفاق رائے کے لیے ڈیڈلائن دی تھی اور ساتھ ہی یہ دھمکی دی تھی کہ اگر وہ کسی نتیجے تک نہ پہنچے تو پھر حوثی اپنا حل مسلط کردیں گے۔