.

ٹوکیو دہشت گردی کے مقابلے کے لئے 15٫5 ملین ڈالر امداد دے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

جاپان نے اعلان کیا ہے کہ وہ مشرق وسطیٰ اور افریقہ میں دہشت گردی کے مقابلے کے لئے 15٫5 ملین ڈالر کی امداد فراہم کرے گا۔ ٹوکیو کی جانب سے یہ اقدام دو جاپانی شہریوں کی داعش کے ہاتھوں موت کے بعد دہشت گردی کے خلاف اس کے مضبوط عزم کا اظہار کے طور پر اٹھایا گیا ہے۔

جاپان کے وزیر خارجہ فومیو کیشیدا نے ایک بیان میں کہا ہے کہ یہ امداد مشرق وسطیٰ اور افریقہ میں دہشت گردی کے خلاف استعداد کار بڑھانے، بارڈر کنٹرول، تفتیش اور قانونی نظام میں بہتری کے لئے دی گئی ہے۔

جاپان کی طرف سے اعلان کردہ یہ رقم کیشیدا کے جنوری میں دورہ برسلز کے دوران اعلان کردہ 7٫5 ملین ڈالر سے تقریبا دوگنا ہے۔

وزارت کے عہدیداران کے مطابق اس امداد پر دیگر تفصیلات نائب وزیر خارجہ یاسوہیدے ناکایاما کی جانب سے واشنگٹن میں ہونے والی عالمی انسداد دہشت گردی کانفرنس میں دی جائے گی۔

جاپان کا یہ اعلان عراق اور شام میں سرگرم انتہاپسند گروپ داعش کی جانب سے دو جاپانی شہریوں کے قتل کے کئی ہفتے بعد سامنے آیا ہے۔

داعش نے دونوں جاپانی شہریوں کے عوض 200 ملین ڈالر تاوان طلب کیا تھا مگر بعد میں انہوں نے اردن سے ایک سزائے موت کے قیدی کی رہائی کا مطالبہ کردیا۔ جاپان نے اردن سے مدد طلب کی مگر داعش نے دونوں جاپانیوں اور ایک اردنی ہواباز کو قتل کردیا۔

جاپان نے امید ظاہر کی ہے کہ وہ اس تازہ امداد سے دہشت گردی کے خلاف اپنے عزم کا اظہار کرتا رہے گا۔ جاپان کی امداد بین الاقوامی تنظیموں کی مدد سے متاثرہ علاقوں میں تقسیم کیا جائے گا جن میں عراق اور شام کے ہمسایہ ممالک شامل ہیں۔