.

سمیہ ایردوآن کے قتل کا منصوبہ حقیقت یا فسانہ؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

تُرکی کے پبلک پراسیکیوٹر جنرل نے صدر رجب طیب ایردوآن کی صاحبزادی سمیہ ایردوآن کے قتل کی سازش تیار کیے جانے کی خبروں کی تحقیقات شروع کی ہیں تاہم ابھی تک یہ معلوم نہیں ہو سکا کہ سمیہ کو قاتلانہ حملے میں مارنے کی دھمکی آمیز افواہیں کس حد تک مصدقہ ہیں؟

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق انقرہ کے پبلک پراسیکیوٹر کے دفتر سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ صدر کے صاحبزادی کے قتل کی سازش سے متعلق پریس میں شائع ہونے والی اطلاعات ’ایف آئی آر‘ کے مترادف ہیں جس کے بعد ان کی براہ راست تحقیقات کا جواز پیدا ہوتا ہے، تاکہ یہ معلوم کیا جا سکے کہ دھمکی آمیز خبروں میں کس حد تک صداقت ہے۔

خیال رہے کہ حال ہی میں ترکی کے بعض مقامی اخبارات نے یہ خبر شائع کی تھی کہ موبائل ایس ایم ایس کے ذریعے یہ بتایا گیا تھا کہ سمیہ ایردوان کو رواں سال سات جون کو ہونے والے پارلیمانی انتخابات سے قبل قتل کرنے کی اسکیم تیار کی گئی ہے۔ ان خبروں کے سامنے آنے کے بعد ترک پولیس اور انٹیلی جنس ادارے حرکت میں آ گئے ہیں۔

اخبار’’ینی شفق‘‘ کے مطابق ترک خبر رساں اداروں نے مختصر پیغامات ’’ایس ایم ایس‘‘ کی تحقیقات کی ہیں جن سے یہ بات ثابت ہوتی ہے کہ سمیہ ایردوآن کو سیاسی بنیادوں پر قتل کرنے کی اسکیم تیار کی جا سکتی کیونکہ سمیہ کے پارلیمانی انتخابات میں حصہ لینے کے اعلان کے بعد اس نوعیت کے دھمکی آمیز بیانات سامنے آتے رہے ہیں۔