.

اسرائیل امریکا سے 14 ایف 35 اسٹیلتھ طیارے خریدے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل اپنے پشتی بان ملک امریکا کی طیارہ ساز فرم لاک ہیڈ مارٹن سے چودہ ایف 35 اسٹیلتھ لڑاکا طیارے خریدے گا۔

اسرائیل کی وزارت دفاع نے اتوار کو ایک بیان میں یہ طیارے خرید کرنے کی اطلاع دی ہے اور بتایا ہے کہ ایک اسٹیلتھ ایف 35 طیارے کی قیمت قریباً گیارہ کروڑ ڈالرز ہوگی اور ان تمام چودہ طیاروں اور ان کے فاضل پرزوں کی کل مالیت تین ارب ڈالرز کے لگ بھگ ہوگی۔

بیان میں مزید بتایا گیا ہے کہ دو ارب اسی کروڑ بیس لاکھ ڈالرز مالیت کی اس ڈیل پر اسی اختتام ہفتہ پر دستخط کیے گئے ہیں اور اس میں معاون ٹیکنالوجی اور ان طیاروں کو چلانے اور ان کی دیکھ بھال کی تربیت کی لاگت بھی شامل ہے۔اسرائیل کی ایک وزارتی کمیٹی نے نومبر 2014ء میں امریکا سے یہ جدید لڑاکا طیارے خریدنے کی منظوری دی تھی۔

واضح رہے کہ اسرائیل نے امریکا سے سنہ 2010ء میں انیس ایف 35 اسٹیلتھ لڑاکا طیارے خرید کرنے کے لیے سمجھوتے پر دستخط کیے تھے۔یہ نیا سمجھوتا بھی اسی کا حصہ ہے۔اس کے تحت اسرائیل پہلے چودہ طیارے خریدے گا اور اس کے بعد وہ مزید سترہ طیارے بھی خرید کرسکے گا۔

توقع ہے کہ ان طیاروں کی پہلی کھیپ 2016 ء کے اختتام تک اسرائیل پہنچ جائے گی۔اسرائیلی وزارت دفاع نے سنہ 2010ء میں ان طیاروں کی خریداری سے متعلق ابتدائی سمجھوتے کا اعلان کیا تھا اور بتایا تھا کہ اس کا ایک حصہ اسرائیل کی طیارہ ساز فرموں میں اس جدید لڑاکا طیارے کو جوڑنے اور اس کے فاضل پرزہ جات کی تیاری سے متعلق ہے۔