.

حوثیوں کے ہاتھوں اصلاح پارٹی کا سربراہ اغواء

صدر عبد ربہ منصور ھادی اشتہاری قرار دے دیئے گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں منتخب حکومت کا تختہ الٹنے والے اہل تشیع حوثیوں نے ایک کارروائی میں مفاہمتی مذاکرات میں شامل سیاسی جماعت 'الاصلاح' کے سربراہ محمد قحطان کو یرغمال بنا لیا ہے۔

دوسری جانب حوثیوں نے صدر عبد ربہ منصور ھادی کو ’مفرور‘ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ھادی آئینی طور پر منصب صدارت کا عہدہ کھوہ چکے ہیں۔

'العربیہ' ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق حوثی جماعت کی جانب سے جاری ایک بیان میں عبوری سپریم کونسل کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ عبد ربہ منصور ھادی سے کسی قسم کی ہدایت نہ لے کیونکہ عبد ربہ اب صدر نہیں رہے ہیں۔ وہ بھگوڑے ہیں اور ان کے ساتھ کسی قسم کا تعاون نہیں کیا جا سکتا ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ عبد ربہ منصور ھادی صنعاء سے فرار کے بعد عدالتوں کو بھی مطلوب ہیں۔ انہوں نے قوم کو نقصان پہنچایا، ملک کا امن وامان اور معیشت تباہ کر دی جس کے بعد وہ کسی اعلیٰ عہدے کے قابل نہیں رہے ہیں۔

حوثیوں نے صدر عبد ربہ کی عدن میں جاری سیاسی سرگرمیوں پر بھی نظر رکھنے کی ہدایت کی ہے۔ بیان میں شہریوں، سرکاری ملازمین، حکومتی اور فوجی عہدیداروں اور سفارت خانوں کو بھی ہدایت کی گئی ہے کہ وہ مفرور صدر عبد ربہ منصور ھادی کے ساتھ کسی قسم کی ڈیل نہ کریں۔

ہدایت نامے میں مزید کہا گیا ہے کہ عبد ربہ منصور ھادی انہیں بہ طور صدر کوئی حکم دیں تو اس پر عمل درآمد سے انکار کر دیں کیونکہ ایک غیر آئینی صدر کے احکامات قبول کرنا قانون کی سنگین خلاف ورزی تصور کی جائے گی۔