.

شہرت یافتہ امریکی اسنائپر کے قاتل کو عمرقید کی سزا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی ریاست ٹیکساس کی ایک عدالت نے بحریہ کے ایک عالمی شہرت یافتہ اسنائپر(ماہر نشانہ باز) کے قاتل کو مجرم قرار دے کر عمر قید کی سزا سنائی ہے۔عدالتی حکم کے مطابق اس کو پیرول پر رہا بھی نہیں کیا جاسکے گا۔

عدالت نے ستائیس سالہ مجرم ایڈی رے روتھ کا یہ دعویٰ مسترد کردیا ہے کہ کرس کائل اور اس کے دوست چاڈ لٹل فیلڈ پر گولی چلاتے وقت اس کا دماغی توازن درست نہیں رہا تھا اور وہ پاگل ہوگیا تھا۔اس نے ان دونوں کو ٹیکساس میں فروری 2013ء میں گولی مار کر ہلاک کردیا تھا۔

اس کے خلاف ڈیلس سے ایک سو ساٹھ کلومیٹر جنوب مغرب میں واقع ایرتھ کاؤنٹی میں مقدمہ چلایا گیا ہے اور امریکی میڈیا نے اس مقدمے کی لمحہ بہ لمحہ کارروائی رپورٹ کی ہے۔اس دوران مقتول کائل کے عراق میں تجربات سے متعلق کلائنٹ ایسٹ وڈ کی متنازعہ فلم ''امریکی اسنائپر''بھی منظرعام پر آئی ہے۔

دوسرے مقتول چاڈ لٹل فیلڈ کی والدہ جوڈی لٹل فیلڈ نے منگل کی رات مقدمے کا فیصلہ سامنے آنے کے بعد ایک مختصر بیان جاری کیا ہے۔انھوں نے کہا کہ ''ہم اپنے بیٹے کے انصاف کا دوسال تک انتظار کرتے رہے ہیں اور خدا نے ہمیں انصاف دلا دیا ہے اور جیسا ہم چاہتے تھے،ویسا ہی فیصلہ ہوا ہے''۔

مجرم روتھ کے وکلاء نے عدالت میں موقف اختیار کیا تھا کہ ان کا موکل پاگل ہوگیا تھا اور وہ نفسیاتی عارضے میں مبتلا تھا۔روتھ خود بھی ایک سابق میرین ہے اور اس نے کہا تھا کہ وہ مابعد صدماتی تناؤ کے عارضے کا شکار تھا۔اس نے 2 فروری 2013ء کو کائل کو فائرنگ کرکے قتل کیا تھا اور اس کے بعد اس کا ٹرک بھی لے اڑا تھا مگر بعد میں اپنی بہن کے گھر سے پکڑا گیا تھا۔اس نے قتل کی اس واردات کا اعتراف کیا تھا اور کہا تھا کہ لوگ اس کی روح کو گھائل کررہے تھے اور وہ سؤروں کو بھی سونگھ سکتا ہے۔

کائل نے چار فوجی مہموں کے دوران ایک سو ساٹھ افراد کو ہلاک کیا تھا۔اس کی زندگی اور ان فوجی مہموں پر بنائی گئی فلم ''امریکن اسنائپر'' میں اداکار بریڈلے کوپر نے فوجی کا کردار ادا کیا ہے۔شائقین میں یہ فلم بہت مقبول ہوئی ہے اور اب تک بتیس کروڑ ڈالرز کما چکی ہے۔جنگ کے موضوع پر کسی بھی فلم کا یہ ایک ریکارڈ ہے۔