.

مصر:سیناء میں فوجی آپریشن، دسیوں جنگجو ہلاک

نامعلوم مسلح افراد نے کاروباری شخصیت کو اغوا کر لیا:سرکاری میڈیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے شورش زدہ علاقے جزیرہ نما سیناء میں فوج نے بدھ کو ایک بڑی کارروائی کے دوران دسیوں مشتبہ جنگجوؤں کو ہلاک کردیا ہے جبکہ سرکاری میڈیا نے اطلاع دی ہے کہ نامعلوم مسلح افراد نے علاقے میں ایک کاروباری شخصیت کو اغوا کر لیا ہے۔

سکیورٹی ذرائع نے بتایا ہے کہ مصری فوج نے گن شپ اپاچی ہیلی کاپٹروں سے شمالی سیناء کے ایک علاقے میں جنگجوؤں پر حملہ کیا ہے جس کے نتیجے میں اٹھارہ مشتبہ جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔ان جنگجوؤں نے اس سے پہلے علاقے میں چار گاڑیوں کو تباہ کردیا تھا۔

فوج نے شمالی سیناء کے قصبے شیخ زوید میں ایک مکان ،ایک اسکول اور نوجوانوں کے لیے قائم ایک مرکز پر بمباری کی ہے جس کے نتیجے میں بیس مشتبہ جنگجو مارے گئے ہیں اور اٹھائیس زخمی ہوگئے ہیں۔سکیورٹی ذرائع کے مطابق مشتبہ جنگجو ان مقامات پر اجلاس منعقد کررہے تھے۔

ادھر دارالحکومت قاہرہ میں ایک اور سکیورٹی ذریعے نے بتایا ہے کہ سکیورٹی فورسز نے شمالی سیناء میں جنگجوؤں کے خلاف ایک نئی کارروائی شروع کی ہے اور اس میں متعدد جنگجو مارے گئے ہیں۔تاہم مصری فوج نے فوری طور پر اس کارروائی سے متعلق کوئی بیان جاری نہیں کیا ہے۔

درایں اثناء مصر کے سرکاری خبررساں ادارے مڈل ایسٹ نیوز ایجنسی (مینا) نے اطلاع دی ہے کہ نامعلوم مسلح افراد نے شیخ زوید میں پانی کی تقسیم کار کمپنی کے ایک مقامی ڈائریکٹر کو اس کے گھر سے اغوا کر لیا ہے۔

واضح رہے کہ سیناء میں انصار بیت المقدس (اب صوبہ سیناء) اور دوسرے جنگجو گروپ 3 جولائی 2013ء کو مصر کے پہلے منتخب صدر محمد مرسی کی برطرفی کے بعد سے سکیورٹی فورسز پر حملے کررہے ہیں۔ان حملوں میں سیکڑوں فوجی اور پولیس اہلکار ہلاک اور زخمی ہو چکے ہیں۔انصار بیت المقدس نے گذشتہ سال کے آخر میں اپنا نام تبدیل کر لیا تھا اور اس نے اپنا نیا نام صوبہ سینا رکھ لیا تھا۔

اسی جنگجو گروپ نے جنوری کے آخر میں سیناء میں سکیورٹی فورسز پر بیک وقت متعدد حملوں کی ذمے داری قبول کی تھی۔ان میں کم سے کم تیس فوجی ہلاک ہوگئے تھے۔اس گروپ نے سیناء کے شہروں شیخ زوید ،العریش اور رفح میں سکیورٹی فورسز پر بیک وقت حملے کیے تھے۔

صوبہ سیناء نے عراق اور شام میں برسرپیکار سخت گیر جنگجو گروپ داعش کے ساتھ الحاق کررکھا ہے۔اس تنظیم کا کہنا ہے کہ وہ مرسی نواز مظاہرین کے خلاف فوج اور پولیس کے کریک ڈاؤن کے ردعمل میں یہ حملے کررہی ہے۔مصری سکیورٹی فورسز شمالی سیناء میں جنگجو گروپوں کے خلاف گذشتہ مہینوں سے ایک بڑی کارروائی کررہی ہیں لیکن ابھی تک وہ ان جنگجوؤں کا مکمل صفایا کرنے میں کامیاب نہیں ہوئی ہیں اور وہ آئے دن سکیورٹی فورسز پر انتقامی حملے کرتے رہتے ہیں۔