.

صدرھادی نے عدن کو یمن کا عبوری دارالحکومت قرار دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے صدر عبد ربہ منصور ھادی نے جنوبی شہر عدن کو ملک کا عبوری دارالحکومت قرار دیتے ہوئے حکومتی انتظام وانصرام اسی شہر سے چلانے کا فیصلہ کیا ہے۔ العربیہ کے ذرائع کے مطابق صدر ھادی کی جانب سے عدن کو عبوری طور پر ملک کا دارالحکومت قرار دینے کا فیصلہ محض علامتی ہے۔ کیونکہ صنعاء کو بہ طور دارالحکومت ہی برقرار رکھنا چاہتے ہیں اسے تبدیل نہیں کررہے ہیں۔ عارضی طور عدن کو صدر مقام قرار دینے کا مقصد ملک کا انتظام چلانا ہے تاکہ صنعاء سے حوثیوں کا قبضہ ختم کرکے حکومتی مراکز کو دوبارہ صنعاء ہی میں منتقل کیا جاسکے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق صدر ھادی نے گذشتہ روز اپنے عارضی ایوان صدر میں حضرت الموت صوبے سے تعلق رکھنے والے عمائدین کے ایک وفد سے بھی ملاقات کی۔ اس موقع پر انہوں نے کہا کہ ہمارے پاس پانچ اہم صوبے ہیں جن میں صنعاء، عمران، صعدہ اور عدن خاص طورپر شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم حوثی باغیوں کے ساتھ بھی مذاکرات کررہے ہیں۔ ہم نے انہیں بتا دیا ہے کی جب تک صنعاء حوثیوں کے زیرقبضہ دارالحکومت رہے گا اس وقت عدن کو عبوری دارالحکومت کا درجہ حاصل رہے گا۔

خیال رہے کہ حوثی شدت پسندوں نے جنوبی اور شمالی یمن کو متحد رکھنے سے متعلق آئینی مسود مسترد کردیا ہے۔ اس مسودے میں جنوبی یمن کے چار اور شمالی یمن کے دو صوبوں کو ملا کر ایک وفاق تشکیل دینے کی سفارش کی گئی ہے۔