.

الجزائر: فوج کی کارروائی میں تین جنگجو ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

الجزائری فوج نے دارالحکومت الجزائر کے جنوب مغرب میں واقع علاقے میں ایک کارروائی کے دوران تین جنگجوؤں کو ہلاک کردیا ہے اور ان سے بھاری مقدار میں اسلحہ اور گولہ بارود برآمد کر لیا ہے۔

الجزائر کی وزارت دفاع نے منگل کو جاری کردہ ایک بیان میں بتایا ہے کہ ''فوج کے ایک یونٹ نے دارالحکومت سے ڈیڑھ سو کلومیٹر جنوب مغرب میں واقع علاقے تقرارہ میں انسداد دہشت گردی کی ایک کارروائی کے دوران تین دہشت گردوں کو ہلاک کردیا ہے۔ان دہشت گردوں نے فوجی یونٹ پر حملہ کیا تھا جس کے بعد وہ جھڑپ میں مارے گئے ہیں۔

بیان کے مطابق فوجیوں نے دہشت گردوں کے قبضے سے دو کلاشنکوف رائفلیں اور بھاری مقدار میں گولہ بارود برآمد کر لیا ہے۔یاد رہے کہ الجزائر میں 1990ء کے عشرے میں خانہ جنگی کے بعد سے تشدد کے واقعات میں نمایاں کمی واقع ہوئی ہے۔البتہ اسلامی مغرب میں القاعدہ سے وابستہ مسلح گروپ گاہے گاہے سکیورٹی فورسز پر حملے کرتے رہتے ہیں۔الجزائری فوج نے سنہ 2014ء کے دوران مختلف کارروائیوں میں ایک سو سے زیادہ مسلح اسلامی جنگجوؤں کو ہلاک کیا تھا۔

الجزائر سمیت شمالی افریقہ میں واقع دوسرے ممالک میں القاعدہ اور دوسرے گروپوں سے وابستہ جنگجوؤں کی سرگرمیاں کے بعد سکیورٹی فورسز ہائی الرٹ ہیں۔الجزائر کے ایک پڑوسی ملک تیونس میں سکیورٹی فورسز جبل الشعانبی کے علاقے میں انصارالشریعہ کے جنگجوؤں کے خلاف کارروائی کررہی ہیں۔

یہ جنگجو گروپ لیبیا میں بھی تشدد کی کارروائیوں میں ملوّث ہے اور اس کی بن غازی اور ملک کے مشرقی شہروں میں سرکاری سکیورٹی فورسز کے ساتھ لڑائی جاری ہے۔اس گروپ پر 2013ء میں تیونس میں امریکی سفارت خانے اور 2012ء میں بن غازی میں امریکی قونصل خانے پر حملے کا الزام عاید کیا گیا تھا۔اس حملے میں لیبیا میں متعیّن امریکی سفیر ہلاک ہوگیا تھا۔