.

سعودی عرب سے کشیدگی، سویڈش بادشاہ ثالثی کے لیے تیار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یورپی ملک سویڈن اور سعودی عرب کے درمیان حالیہ دنوں میں پیدا ہونے والی سفارتی کشیدگی کے بعد شہنشاہِ سویڈن گوسٹائو شانزدہم نے اسٹاک ہوم اور ریاض کے درمیان مفاہمت کے لیے ثالثی کا کردار ادا کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

سویڈش رائل کورٹ کی جانب سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ شاہ گوسٹائو سعودی عرب کے ساتھ اپنی حکومت کا سفارتی تنازع ختم کرنے کی خاطر ثالثی کے لیے تیار ہیں۔ اس سلسلے میں سویڈش وزیرخارجہ مارگوٹ فالسٹروم کل سوموار کوان سے ملاقات بھی کریں گی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سویڈش وزارت خارجہ کے پریس سیکرٹری اریک بومان اور رائل کورٹ کی خاتون سیکرٹری مارگریٹا تھو گرین نے بتایا ہے کہ وزیرخارجہ کا شہنشاہ سویڈن کے درمیان ملاقات کا وقت مقرر کردیا گیا ہے۔ وہ کل سوموار کو شاہی محل میں بادشاہ سے ملاقات کریں گی۔

اسٹاک ہوم میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مسز تھور گرین کا کہنا تھا کہ بادشاہ سلامت کے پاس سعودی عرب سے تنازع کے حل کے حوالے سے کچھ تجاویز ہیں تاہم انہوں نے اس کی مزید تفصیل نہیں بتائی۔ ان کا کہنا تھا کہ سویڈن عالمی برادری کے ساتھ یکساں دوستانہ تعلقات کا خواہاں ہے۔

خیال رہے کہ سویڈن اور سعودی عرب کے درمیان پچھلے چند ہفتوں سے کشیدگی میں اضافہ دیکھا گیا ہے۔ سویڈن کی جانب سے سعودی عرب میں انسانی حقوق کی پامالیوں کے الزامات اور دفاعی معاہدے کی منسوخی کےبعد دونوں ملکوں کے درمیان سفارتی سطح پرکشیدگی بڑھ گئی تھی۔