.

فرانس میں جرمن طیارہ گر کر تباہ ،150 افراد ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

جرمنی کی فضائی کمپنی لفتھانسا سے وابستہ جرمن ونگز کا ایک مسافر طیارہ فرانس کے جنوبی پہاڑی علاقے میں گر کر تباہ ہوگیا ہے۔حادثے کے نتیجے میں طیارے میں سوار تمام ایک سو پچاس افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

فرانسیسی حکام کے مطابق مسافر طیارہ سپین کے ساحلی شہر بارسلونا سے جرمن شہرڈیوسلڈرف جارہا تھا اور یہ فرانس کے جنوب مشرقی قصبے بارسلونیٹ کے نزدیک گر کر تباہ ہوا ہے۔ یہ قصبہ فرانسیسی شہر نائس سے قریباً ایک سو کلومیٹر شمال میں واقع ہے۔طیارے میں ایک سو چوالیس مسافر اور عملے کے چھے ارکان سوار تھے۔

فرانسیسی وزارت داخلہ کے ترجمان پائیرے ہینری برانڈیت نے صحافیوں کو بتایا ہے کہ جرمن کمپنی کا مسافر طیارہ منگل کی صبح بارسلونا سے 9.55 بجے روانہ ہوا تھا اور اس نے 10:45 پر کسی فنی خرابی کے اشارے دیے تھے۔اس کے بعد سطح سمندر سے قریباً دو ہزار میٹر بلندی پر واقع پہاڑی علاقے میں گر کر تباہ ہوگیا۔جرمن ونگز کے زیر انتظام چلنے والی یہ ائیربس اے 320 چوبیس سال پرانی ہے اور یہ 1991ء سے لفتھانسا گروپ کے زیر استعمال ہے۔

قبل ازیں فرانسیسی صدر فرانسو اولاند نے ایک بیان میں کہا تھا کہ طیارے میں ایک سو اڑتالیس افراد سوار تھے اور حادثے کی شدت کے پیش نظر ان میں سے کسی کے زندہ بچنے کی امید نہیں ہے۔مسافروں میں زیادہ تر جرمن تھے۔

انھوں نے بتایا کہ حادثے ایک ایسے غیر آباد پہاڑی علاقے میں پیش آیا ہے جہاں رسائی دشوار ہوتی ہے۔فرانسیسی وزیرداخلہ برنارڈ کازینوف کا کہنا ہے کہ ائیربس اے 320 کے ملبے کا پتا چلا لیا گیا ہے اور وہ جائے حادثہ پر پہنچ رہے ہیں۔

جرمن ونگز نے اپنی پرواز4 یو 9525 کو پیش آئے حادثے کی تصدیق کردی ہے۔اس فضائی کمپنی کا کہنا ہے کہ طیارے میں سڑسٹھ جرمن شہری سوار تھے۔سپین کے نائب وزیراعظم کے بہ قول طیارے کے پینتالیس مسافروں کے نام ہسپانوی ہیں اور اس میں ایک بیلجیئم کا باشندہ سوار تھا۔مرنے والوں میں سولہ بچے اور جرمنی کے ایک شمال مغربی قصبے ہالٹرن کے ایک ہائی اسکول کے دو اساتذہ بھی شامل ہیں۔