.

یمنی فورسز کا عدن کے ہوائی اڈے پر دوبارہ قبضہ

آپریشن''فیصلہ کن طوفان''آغاز ہونے کے چند گھنٹے بعد اہم کامیابی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے صدر عبد ربہ منصور ہادی کی وفادار فورسز نے جنوبی شہرعدن کے ہوائی اڈے کا حوثی ملیشیا سے دوبارہ کنٹرول حاصل کر لیا ہے۔

حوثی باغیوں نے بدھ کو ہوائی اڈے پر قبضہ کر لیا تھا اور انھوں نے شہر میں صدارتی کمپاؤنڈ پر میزائل بھی داغے تھے۔العربیہ نیوز کی رپورٹ کے مطابق یمنی فورسز نے حوثیوں پر گولہ باری کی ہے جس کے بعد وہ ائیربیس سے پسپا ہو گئے ہیں۔عینی شاہدین نے بہت سے حوثی جنگجوؤں کو راہ فرار اختیار کرتے ہوئے دیکھا ہے۔

صدر منصور ہادی کی وفادار فورسز نے سعودی عرب کی قیادت میں دس اتحادی ممالک کی حوثی شیعہ ملیشیا کے خلاف فضائی مہم کے آغاز کے چند گھنٹے کے بعد ہی یہ اہم کامیابی حاصل کی ہے اور انھوں نے حوثی ملیشیا کو عدن کے ہوائی اڈے سے بھاگ جانے پر مجبور کردیا ہے۔

یمنی صدر اس وقت عدن ہی میں موجود ہیں ۔تاہم انھیں بدھ کو حوثیوں کے میزائل حملے کے بعد کسی محفوظ مقام پر منتقل کردیا گیا ہے۔ان کے دفتر کے ڈائریکٹر محمد مارم نے ایک بیان میں کہا ہے کہ سعودی عرب کی قیادت میں حوثیوں کے خلاف آپریشن سے یمنی شہریوں کا اعتماد بحال ہوا ہے،صدر منصور ہادی کا عزم بلند ہے اور انھوں نے سعودی عرب سمیت خطے کے ممالک کا حوثیوں کے خلاف اس جنگ پر شکریہ ادا کیا ہے۔

سعودی عرب کی حوثیوں کے خلاف فضائی مہم کو ''فیصلہ کن طوفان'' کا نام دیا گیا ہے اور اس کے آغاز کے بعد حوثیوں کے متعدد ٹھکانوں کو لڑاکا طیاروں نے بمباری میں نشانہ بنایا ہے جن کے نتیجے میں حوثی ملیشیا کے متعدد کمانڈر اور جنگجو مارے گئے ہیں۔یمنی حکام کے بہ قول سعودی طیاروں نے زیادہ تر فضائی حملے ملک کے شمالی شہروں پر کیے ہیں۔