.

حوثیوں نے 1800 جرائم پیشہ قیدی جیلوں سے رہا کر دیے

اتحادی طیاروں کی بمباری سے انتہا پسند گروپ کے کئی اسلحہ ڈپو تباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں اقتدار پر طاقت کے ذریعے قابض اہل تشیع مسلک کے حوثی گروپ نے ملک کی مختلف جیلوں میں ڈالے گئے 1800 جرائم پیشہ قیدی رہا کر دیے ہیں۔ زیادہ تر جرائم پیشہ قیدیوں کی رہائی حجہ شہر کی ایک جیل سے کی گئی تاہم بعض دوسری جیلوں سے بھی قیدیوں کو رہا کردیا گیا ہے۔

ادھر سعودی عرب کی قیادت میں حوثیوں کے خلاف فضائی آپریشن’’فیصلہ کن طوفان‘‘ جاری ہے۔ اتحادی طیاروں نے اتوار اور پیر کی درمیانی شب صعدہ گورنری میں قائم ’’کہلان‘‘ فوجی اڈے سے بھاری مقدار میں اسلحہ اور گولہ بارود دوسرے مقامات پر منتقل کرنے کی کوشش ناکام بنا دی۔ اطلاعات کے مطابق جنگی جہازوں نے کہلان فوجی کیمپ پر بمباری کی جس کے نتیجے میں کیمپ میں موجود اسلحہ اور وہاں سے قافلے کی شکل میں ہتھیاروں کی دوسرے مقامات پر منتقلی کی کوشش ناکام بنا دی گئی۔

اتحادی طیاروں کی جانب سے یمن میں حوثی شدت پسندوں کے زیر قبضہ اسلحہ اور میزائل کے ذخائر کو تباہ کرنے پر توجہ مرکوز کی گئی ہے تاہم دشمن کو غیر مسلح کرکے شکست سے دوچار کیا جا سکے۔

سعودی عرب کے جنگی طیاروں نے دارالحکومت صنعاء کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کے قریب الدیلمی اسلحہ ڈپو کو بھی تباہ کردیا۔ ایوان صدر کے قریب موجود اسلحہ ڈپو سمیت آس پاس کے پہاڑی علاقوں میں چھپائے گئے اسلحے کے کئی ذخائر بھی تباہ کردیے گئے ہیں۔