.

''فیصلہ کن طوفان'':حوثیوں پر مسلسل پانچویں رات بمباری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی قیادت میں اتحادی ممالک کے لڑاکا طیاروں نے سوموار اور منگل کی درمیانی شب مسلسل پانچویں رات یمن کے دارالحکومت صنعا اور مغربی بندرگاہ الحدیدہ میں ایران کے حمایت یافتہ حوثی شیعہ باغیوں پر بمباری کی ہے۔

العربیہ نیوز چینل کی رپورٹ کے مطابق فضائی حملوں میں سابق صدر علی عبداللہ صالح کی حامی ملیشیا کو بھی نشانہ بنایا گیا ہے۔العربیہ کو ملنے والی فوٹیج میں صنعا میں دھماکوں کی آوازیں سنی جاسکتی ہیں۔لڑاکا جیٹ صنعا کی فضائی حدود میں رات نو بجے سے صبح تک اڑتے رہے تھے۔

سعودی طیاروں نے صنعا میں ایران کے حمایت یافتہ حوثی باغیوں کے علاوہ صدارتی محل پر قابض کالعدم ری پبلکن گارڈ کے فوجیوں پر بھی بمباری کی ہے۔عینی شاہدین کے مطابق صنعا سے جنوب میں واقع ری پبلکن گارڈ کے ایک کیمپ کو بھی نشانہ بنایا گیا ہے۔

ادھر صنعا سے ایک سو چالیس کلومیٹر مشرق میں واقع مآرب کے نواحی علاقے میں میزائل تنصیبات اور زمین سے فضا میں مار کرنے والے میزائلوں پر عرب اتحادیوں کے طیاروں نے بمباری کی ہے۔

یمن کے مغرب میں واقع ساحلی شہر الحدیدہ میں طیارہ شکن دفاعی نظام کو فضائی حملوں میں نشانہ بنایا گیا ہے اور علاقے کے مکینوں نے بتایا ہے کہ سعودی طیاروں نے جنوب کی جانب واقع بہت سے فوجی اہداف پر بمباری کی ہے۔تاہم ان حملوں میں ہونے والے جانی نقصان کے بارے میں فوری طور پر کوئی اطلاع نہیں ہے۔