.

سعودی، یمن بارڈر پر جھڑپ میں سرحدی محافظ شہید

بری فوج کی بروقت کارروائی سے دس زخمی محافظوں کا بروقت ریسکیو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب اور یمن کی سرحد پر ہونے والی جھڑپوں میں ایک سعودی سرحدی محافظ سليمان علی يحيى المالكی شہید جبکہ دس دوسرے زخمی ہو گئے.

وزارت داخلہ کے سیکیورٹی ترجمان جنرل منصور الترکی کے مطابق عسیر کے علاقے میں اگلے مورچے الحصن میں ڈیوٹی سرانجام دینے والے سعودی سرحدی محافظوں پر یمنی سرحد کے جبلیہ علاقے سے گذشتہ شب دس بجے فائرنگ کی گئی، جس کا سعودی سرحدی محافظوں کی جانب سے بھرپور جواب دیا گیا اور صورتحال پر بری فوجی دستوں کی بروقت مدد سے قابو پا لیا گیا.

جنرل منصور الترکی نے مزید بتایا کہ فائرنگ کے تبادلے میں میں سعودی عرب کا ایک سرحدی محافظ جام شہادت نوش کر لیا جبکہ فورس کے دس افراد فائرنگ سے زخمی ہوئے، تاہم ان کی زندگی محفوظ رہی. زخمیوں کو علاج معالجے کے لئے ہسپتال داخل کرا دیا گیا ہے.

سعودی اخبار 'الریاض' نے اپنے آن لائن ایڈیشن میں ایک خصوصی ویڈیو میں شہید سعودی سرحدی محافظ المالکی کے والد کا انٹرویو نشر کیا ہے جس میں ان کا کہنا تھا کہ دین، وطن اور سعودی قیادت بشمول شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی ہدایات کی روشنی میں ان کے بیٹے کا شہادت پر فائز ہونا ہم سب کے لئےبڑا مقام ہے.