یمن:حوثیوں کا عدن میں سرکاری ٹی وی اسٹیشن پر حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

یمن کے جنوبی شہر عدن میں اتوار کو حوثی باغیوں اور ان کی اتحادی ملیشیا نے صدر عبد ربہ منصور ہادی کی حکومت کے زیرانتظام چلنے والے ایک سرکاری ٹیلی ویژن اسٹیشن کی عمارت پر مارٹر گولے داغے ہیں اور شہری آبادی پر فوج کے ٹینکوں سے بمباری کی ہے۔

ایک یمنی عہدے دار نے بتایا ہے کہ حوثی ملیشیا کے حملے میں عدن ٹی وی کی عمارت کو نقصان پہنچا ہے لیکن اس میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔اس ٹی وی اسٹیشن کی عمارت پر یہ حملہ ایسے وقت میں کیا گیا ہے جب حوثی باغیوں اور صدر ہادی کی وفادار فورسز کے درمیان عدن کے علاقوں المعلا اور قلوآ میں جھڑپیں جاری ہیں۔ان میں پانچ افراد ہلاک اور چودہ زخمی ہوگئے ہیں۔شہر کے محکمہ صحت کے ڈائریکٹر الخضر الاصور نے بتایا ہے کہ زخمیوں میں بچے بھی شامل ہیں۔

ایران کے حمایت یافتہ حوثی جنگجوؤں کے حوالے سے پہلے یہ خبر آئی تھی کہ انھوں نے عدن میں شہری علاقوں پر گولہ باری کی ہے اور صدر منصورہادی کی وفادار فورسز کو بعض علاقوں سے پسپا کردیا ہے۔

حوثیوں نے سعودی عرب کی قیادت میں اتحادی طیاروں کی بمباری کے باوجود عدن اور دوسرے شہروں میں پیش قدمی جاری رکھی ہوئی ہے اور وہ دارالحکومت صنعا پر گذشتہ سال ستمبر میں قبضے کے بعد سے ملک کے جنوبی اور وسطی علاقوں کو بھی اپنے زیرنگیں لانے کے لیے کوشاں ہیں۔ان کی عدن پر چڑھائی سے صدر عبد ربہ منصور ہادی سعودی عرب کے دارالحکومت الریاض چلے گئے تھے اور اس وقت وہ وہیں سے اپنی حکومت چلا رہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں