.

صدر ھادی نے خالد بحاح کو وزیراعظم اور نائب صدر مقررکردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے صدر عبد ربہ منصور ھادی نے وزیراعظم خادل بحاح کو ملک کا نائب صدر مقرر کرتے ہوئے انہیں وزرارت عظمیٰ پربھی بحال کردیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق بحاح کو سابق وزیراعظم باسندوہ کی سبکدوشی کے بعد 13 اکتوبر 2014ء کو وزیراعظم مقرر کیا گیا تھا۔ تین ماہ کے کم عرصے میں جب حوثی باغیوں اور سابق صدر علی عبداللہ صالح کے ہمنوائوں نے اُنہیں یرغمال بنا کر کابینہ کے ارکان سمیت گھروں میں نظر بند کردیا تویمن کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی مندوب جمال بن عمرکی مساعی سے انہیں رہائی ملی تھی۔ وہ حوثیوں سے رہائی کے بعد جنوبی یمن کے شہرعدن روانہ ہوگئے تھے جہاں سے وہ اپریل کے اوائل میں سعودی عرب پہنچے ہیں۔

حوثیوں کی مسلح بغاوت کے بعد وزیراعظم خالد بحاح نے بھی 22 جنوری کو اپنا استعفیٰ پیش کردیا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ استعفیٰ واپس نہیں لیں گے کیونکہ ان کی حکومت ملک میں امن وامان کےقیام میں کامیاب نہیں ہوسکی ہے۔

مبصرین کے خیال میں وزیراعظم کے بلحاح کے استعفے سے حوثی باغیوں کو مزید حوصلہ ملا اور انہوں نے ملک کے تمام ریاستی اور عسکری اداروں کو بھی اپنے کنٹرول میں لے لیا تھا۔ حال ہی میں صدر نے نہ صرف انہیں دوربارہ ملک کا وزیراعظم مقرر کیا ہے بلکہ انہیں نائب صدر بھی مقرر کیا گیا ہے۔

درایں اثناء یمن کی ایک سیاسی جماعت ’’سماج یونین سیٹ‘‘ کی جانب سے خالد بحاح کو دوبارہ ملک کا وزیراعظم اور نائب صدر بنائے جانے کےفیصلے کی تائید کی ہے۔ جماعت کی جانب سے سامنے آنے والے رد عمل میں کہا گیا ہے کہ بحاح کو ان کے عہدے پر بحال کرنے سے ملک میں جاری سیاسی بحران کو ختم کرنے میں مدد ملے گی۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ یمن کو اس وقت خالد بحاح جیسے مضبوط اعصاب کے مالک رہ نمائوں کی اشد ضرورت ہے۔