.

عراقی وزیراعظم کی صدر اوباما سے ذاتی اپیل

داعش مخالف جنگ جیتنے کے لیے عالمی برادری مزید امداد مہیا کرے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے وزیراعظم حیدرالعبادی نے امریکی صدر براک اوباما سے سخت گیر جنگجو گروپ دولت اسلامی (داعش) کو شکست سے دوچار کرنے کے لیے مزید امداد دینے کی ذاتی اپیل کی ہے۔

ڈاکٹر حیدرالعبادی وزیراعظم منتخب ہونے کے بعد امریکا کے پہلے دورے پر ہیں۔انھوں نے بغداد کے ہوائی اڈے پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ''امریکا کے فضائی حملوں میں شدت ،ہتھیاروں اور تربیت کی وجہ سے داعش کو پسپا کرنے میں مدد ملی ہے لیکن ان کے خاتمے کے لیے ہمیں بین الاقوامی اتحاد کی جانب سے مزید امداد کی ضرورت ہے''۔

امریکی نائب صدر جوزف بائیڈن نے گذشتہ ہفتے ایک تقریر میں عراق کو مزید امداد مہیا کرنے کا اشارہ دیا ہے۔وائٹ ہاؤس کے ترجمان جوش ایرنسٹ نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ''اگر امداد میں اضافے کے لیے وزیراعظم حیدرالعبادی کی کوئی خاص تجویز ہے تو اس پر سنجیدگی سے غور کیا جائے گا''۔

ترجمان نے کہا کہ عراق کی قومی اتحاد کی حکومت کے ساتھ کام سکیورٹی کو بہتر بنانے کے لیے اہمیت کا حامل ہے۔ داعش کے خلاف جنگ میں گذشتہ چند مہینوں کے دوران امریکا کی جانب سے تعاون کو عراق بھی تسلیم کرتا ہے۔

امریکا اور اس کے اتحادی ممالک نے گذشتہ سال اگست کے بعد عراق میں داعش کے جنگجوؤں اور ان کے ٹھکانوں پر قریباً دو ہزار فضائی حملے کیے ہیں اور قریباً چودہ سو حملے پڑوسی ملک شام میں کیے گئے ہیں۔امریکی حکام کا کہنا ہے کہ داعش کے خلاف یہ مہم کئی سال تک جاری رہ سکتی ہے۔