.

یمن کے ساتھ سرحدی علاقے میں سعودی فوجی شہید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے سرحدی علاقے میں یمن کی جانب سے شدید فائرنگ اور مارٹر گولوں کے حملے میں ایک فوجی شہید اور دو زخمی ہوگئے ہیں۔

سعودی عرب کی وزارت داخلہ کے ترجمان میجر جنرل منصور الترکی نے سوموار کو ایک بیان میں بتایا ہے کہ یمنی علاقے سے سرحدی صوبے نجران میں اتوار کی رات فوجیوں پر حملہ کیا گیا تھا۔یمن میں سعودی عرب کی قیادت میں حوثی شیعہ باغیوں کے خلاف آپریشن فیصلہ کن طوفان کے آغاز کے بعد سے سرحدی علاقے میں حملوں میں متعدد سعودی فوجی شہید ہو چکے ہیں۔

11 اپریل کو حوثی شیعہ جنگجوؤں نے سرحدی علاقے میں سعودی سکیورٹی فورسز کی ایک گشتی پارٹی پر حملہ کیا تھا جس کے نتجے میں تین فوجی جاں بحق ہوگئے تھے۔قبل ازیں اپریل کے اوائل میں سعودی عرب کے یمن کے ساتھ واقع جنوب مغربی صوبہ عسیر میں مسلح حملہ آوروں کی فائرنگ سے دو فوجی جاں بحق ہوئے تھے۔

واضح رہے کہ سعودی عرب اور یمن کے درمیان ایک طویل اور غیر محفوظ سرحد ہے۔اس پر کوئی خاطر خواہ سکیورٹی نہ ہونے کی وجہ سے اسمگلر اور اسلام پسند نوجوان سرحد کے آرپار آتے جاتے رہتے ہیں لیکن حالیہ دنوں میں حوثی ملیشیا نے بھی سرحد پر اپنی کارروائیاں تیز کردی ہیں اور ان کی دراندازی کے پیش نظر سعودی عرب کی مسلح افواج کو ہزاروں کی تعداد میں سرحد پر تعینات کیا گیا ہے۔