.

یمن بحران کے حل کے لیے اومان کا سات نکاتی فارمولہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

خلیجی ریاست سلطنت اومان نے یمن میں جاری بحران کے خاتمے کے لیے سات نکات پر مشتمل ایک فارمولہ پیش کیا ہے۔ اگرچہ مسقط کی جانب سے یمن میں مفاہمتی فارمولہ اس وقت پیش کیا تھا جب یمن میں حوثی باغیوں کے خلاف سعودی عرب کا ’’فیصلہ کن طوفان‘‘ آپریشن جاری تھا۔ یاد رہے کہ سلطنت اومان خلیجی ریاست ہونے کے باوجود سعودی عرب کے یمن کے خلاف فوجی آپریشن میں شامل نہیں ہوا ہے۔ مسقط حکومت کی جانب سے پیش کردہ تجاویز درج ذیل ہیں۔

1۔ حوثی جنگجو اور علی صالح کی وفادار ملیشیا شہروں سے نکل جائے اور اسلحہ فوج کے حوالے کردے۔

2۔ صدر منصور ھادی کی قیادت میں آئینی حکومت بحال کی جائے۔

3۔ کم سے کم وقت میں پارلیمانی اور صدارتی انتخابات عمل میں لائے جائیں۔

4۔ یمن کے تمام سیاسی دھڑوں پر مشتمل قومی حکومت تشکیل دی جائے۔

5۔ حوثی بندوق چھوڑ کر سیاست میں حصہ لیں اور آئینی طریقے سے اقتدار کے حصول کی کوشش کریں۔

6۔ یمن کی دگر گوں معیشت کو سہارا دینے کے لیے عالمی ڈونرزکانفرنس کا انعقاد کیا جائے۔

7۔ یمن کو خلیج تعاون کونسل کی رکنیت کی تجاویز پیش کی جائیں۔