.

سعودی اتحادی طیاروں کی عدن میں حوثیوں پر بمباری

شہر پر قبضے کے لیے حوثی باغیوں اور مقامی قبائلیوں کے درمیان شدید لڑائی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی قیادت میں اتحادی ممالک کے لڑاکا طیاروں نے یمن کے جنوبی شہر عدن میں حوثی شیعہ باغیوں کے ٹھکانوں نئی بمباری کی ہے۔

عدن کے علاقوں خورمکسر اور دار سعد میں الریاض میں خودساختہ جلا وطن یمنی صدر عبد ربہ منصور ہادی کی وفادار سرکاری سکیورٹی فورسز اور ان کے حامی قبائلی جنگجوؤں کی حوثی شیعہ باغیوں کے ساتھ شدید لڑائی ہورہی ہے۔سعودی اتحادیوں کے لڑاکا طیاروں نے ان دونوں علاقوں میں حوثی باغیوں کے ٹھکانوں پر فضائی حملے کیے ہیں۔

شہر کے محکمہ صحت کے سربراہ آل خضر الازور نے بتایا ہے کہ جمعرات کی شب سے جاری لڑائی میں آٹھ افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔ان میں حکومت کے حامی پانچ جنگجو اور تین شہری ہیں۔ان کے علاوہ چوالیس افراد زخمی ہوئے ہیں۔حوثی باغیوں کے جانی نقصان کے بارے میں کوئی اطلاع نہیں ہے۔

حوثی باغیوں اور ان کے حامی سابق صدر علی عبداللہ صالح کے وفادار دستوں نے عدن پر قبضے کے لیے گذشتہ ایک ماہ سے چڑھائی کررکھی ہے۔عوامی مزاحمتی یونٹوں کے نام سے معرض وجود میں آنے والی مقامی ملیشیا ان کا دفاع کررہی ہے۔

سعودی عرب کی قیادت میں اتحاد نے 21 اپریل کو حوثی باغیوں پر فضائی حملے روک دیے تھے لیکن اس کے بعد بھی یمن کے مختلف علاقوں میں حوثی باغیوں کی پیش قدمی کے پیش نظر اتحادی طیاروں نے ان پر فضائی حملے جاری رکھے ہوئے ہیں۔رات کو اتحادی طیاروں نے جنوبی صوبوں لحج اور ابین میں بھی حوثیوں کے ٹھکانوں پر بمباری کی تھی۔