.

"عمر بھر ملک وقوم کا خادم ومحافظ رہوں گا"

شاہ سلمان میرے لیے رہ نمائی کا سرچشمہ ہیں: شہزادہ سعود الفیصل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے سبکدوش ہونے والے وزیرخارجہ شہزادہ سعود الفیصل نے خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی جانب سے بھیجے گئے ایک برقی مراسلے کے جواب میں کہا ہے کہ ’’میں پوری عمر ملک وقوم کا محافظ اور خادم بن کررہوں گا۔ خادم الحرمین الشریفین کی راہ نمائی میں مجھے جو بھی خدمت سونپی گئی اس کی بجا آوری میں کوئی کسر نہیں چھوڑوں گا‘‘۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے اپنے ایک برقی پیغام میں شہزادہ سعود الفیصل کی ملک وقوم کے لیے پیش گئی خدمات کو خراج تحسین پیش کیا ہے۔

اس کے جواب میں شہزادہ سعود الفیصل نے اپنے پیغام میں کہا ہے کہ شاہ سلمان کا پیغام ان کی متواضع شخصیت، خلوص اوراپنے دل میں ہم سب کے لیے جذبہ عزت واحترام کا آئینہ دار ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ میں نے چالیس سال تک ملک کے وزیرخارجہ کے طورپر کام کیا۔ میں نے ہروقت اللہ سے مدد مانگی اور اس سے یہی دعا کی کہ پرور دگار مجھے محنت کرنے والوں میں شمار کرنا اور مجھے درست فیصلہ کرنے اور صحیح راہ پرچلنے کی توفیق عنایت کرنا۔

خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے میرے بارے میں جن محبت بھرے جذبات کا اظہار کیا ہے میرے پاس اس کے شکریے کے لیے الفاظ نہیں ہیں۔

میں خادم الحرمین اور پوری قوم کا خادم ہوں۔ وہ مجھے جو ذمہ داری دیں گے وہ بہ سرو چشم قبول کروں گا اور اسے نبھانے میں اپنی تمام صلاحیتں کھپا دوں گا۔ شاہ سلمان میرے لیے رہ نمائی اور عملی نمونہ ہیں۔ میں عالمی برادری کا بھی شکریہ ادا کروں گا جن کے ساتھ میرا بہ طور وزیرخارجہ تعلق رہا۔ میں ان ممالک اور اقوام کا بھی شکر گذار ہوں جنہوں نے مشکل کی گھڑی میں سعودی قوم کا ساتھ دیا اور پوری دنیا میں امن وامان کےقیام کی سعودی مساعی میں ہاتھ بٹایا۔

شہزادہ سعود الفیصل نے محکمہ خارجہ میں اپنے ساتھ کام کرنے والے اپنے ساتھیوں کا بھی خصوصی شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ میرے ساتھ کام کرنے والے میرے عزی زہم وطنوں نے بھی ملک و قوم کی خاطر ان تھک محنت کی۔ میں انہیں بھی خراج تحسین پیش کرتا ہوں اور ان کے لیے نیک دعائوں اور تمنائوں کا طالب ہوں۔