.

صنعاء میں حوثیوں کا ہنگامی ’رن وے‘ تباہ کردیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی قیادت میں اتحادی ممالک کے طیاروں نے یمن کے دارالحکومت صنعاء میں حوثی شدت پسندوں کی جانب سے ’’السبعین گرائونڈ‘‘ کو ایرانی طیاروں کی لینڈنگ کے لیے رن وے میں تبدیل کیے جانے کی منصوبہ بندی ناکام بنا دی گئی ہے۔ اتحادی طیاروں نے ہفتے کے روز حوثیوں کے اس ہنگامی ’’رن وے‘‘ پر بمباری کرکے اسے تباہ کردیا گیا۔

ادھرتعز شہر میں حوثی شدت پسندوں نے المسبح کالونی اور شاہراہ التحریر میں توپ خانے سے اندھا دھند گولہ باری کی ہے جس کے نتیجے میں بڑے پیمانے پر املاک تباہ ہوئی ہیں۔

تعز کے شمال اور مغربی میں آئینی حکومت کی وفادار عوامی مزاحمتی کمیٹیوں اور حوثی باغیوں کےدرمیان الحصب، المرور اور بئر پاشا کے مقامات پر خون ریز جھڑپیں ہوئی ہیں۔ مزاحمتی کمیٹیوں نے جبل الزنقل اور شاہراہ الاربعین میں متمرکز حوثی باغیوں کے مراکز پربھی گولہ باری کی ہے۔

ادھر عدن میں المعلا اور حافون کالونیوں میں باغیوں اور عوامی کمیٹیوں کے درمیان گھمسان کی لڑائی میں حوثی باغیوں کے دسیوں جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔

عدن ہوائی اڈے کے قریب عوامی مزاحمتی کارکنوں اور حوثی ملیشیا کے درمیان لڑائی جاری ہے۔ حوثیوں نے خود کو ہوائی اڈے کے قریب البدر کیمپ تک محدود کردیا ہے تاہم وہاں سے ہاون راکٹ اور توپ خانے سے گولہ باری جاری ہے۔

مزاحمت کاروں کا کہنا ہے کہ انہوں نے عدن میں جدید ترین اسلحہ، ٹینک شکن راکٹ’’لو‘‘ ،آر پی جی اور مشین گنوں کی بھاری مقدار میں گولیاں بھی قبضے میں لی ہیں۔

ادھر جنوبی یمن کے لودر شہر میں امعین اور عتد محاذ پر لڑائی کے بعد بیشتر علاقوں پر مزاحمتی کارکنوں نے اپنا کنٹرول قائم کرلیا ہے۔ لڑائی میں بڑی تعداد میں حوثی باغی ہلاک اور گرفتار کیے گئے ہیں۔

ادھر بریگیڈ 33 کی جانب سے الجربار کیمپ کو بھجوائی گئی فوجی کمک پر مزاحمتی کارکنوں نے القرین روڈ پر گھات لگا کرحملہ کیا جس کے نتیجے میں سابق صدر علی صالح کے وفادار درجنوں فوجی ہلاک اور دو فوجی گاڑیاں تباہ ہوگئیں۔