.

فضائی حدود کی خلاف ورزی پر ترکی نے شام کا طیارہ مار گرایا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترکی نے ہفتے کے روز فضائی حدود کی خلاف ورزی پر شام کا ایک جنگی طیارہ مار گرانے کا دعویٰ‌ کیا ہے۔

ترکی نیوز چینل "ان ٹی وی" کے مطابق ترکی کے لڑاکا طیاروں نے ملک کی فضائی حدود کی خلاف ورزی کرنے والے ایک شامی طیارے کو نشانہ بنایا جس کے نتیجے میں وہ تباہ ہوگیا ہے۔ ٹی وی رپورٹ کے مطابق ذرائع کا کہنا ہے کہ شام کا جنگی طیارہ ھاتائی، التن اوزو، دفنہ اور بایلا داغی کی فضاء میں پرواز کررہا تھا کہ ترکی کے جنگی جہازوں‌ نے اسے حملے کا نشانہ بنایا، تاہم یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ آیا تباہ کیا گیا شامی جہاز کوئی جیٹ طیارہ تھا یا ملٹری ہیلی کاپٹر تھا۔ تباہ ہونے والے طیارے کے ملبے کی تلاش جاری ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ترکی کے "ایف 16" جنگی جہازوں نے شامی جہاز کو دو مراحل میں نشانہ بنایا جس کے بعد جنگی جہاز ریاست "اضنا" کے ایک ہوائی اڈے پر اتر گئے تھے۔

عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ جنگی طیاروں کے حملے میں‌ شامی جہاز کے تین ٹکڑے ہوگئے اور وہ ایک ہی جگہ ایک دوسرے کے اوپر گرے ہیں۔

ادھر ادلب میں انقلابی کارکنوں نے "العربیہ" کو بتایا کہ ہفتے کی شام ترکی کی جنگی طیاروں نے جس ہوائی جہاز کوحملے میں تباہ کیا ہے وہ شام کا ایک بغیر پائلٹ کے جاسوس طیارہ تھا۔ انقلابی کارکنوں‌ نے ٹیلیفون پر بتایا کہ ترکی کے جنگی طیاروں نے ایک میزائل کے ذریعے شام کے ڈرون طیارے کو اس وقت دو بار نشانہ بنایا جب وہ ترکی کی فضائی حدود میں‌ داخل ہوگیا تھا۔ حملے میں شام کا ڈرون طیارہ ترکی کی سرحد سے متصل درکوش کے مقام پر گر کر تباہ تباہ ہوگیا۔ ترکی کی وزارت دفاع یا فوج کی جانب سے شام کے کسی طیارے کو نشانہ بنانے کا کوئی باضابطہ بیان جاری نہیں کیا گیا۔