.

حوثی مخالف اتحاد نے یمن میں دوبارہ گولا باری شروع کر دی

پانچ روزہ جنگ بندی کا دورانیہ اتوار کے روز مکمل ہوگیا تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی سربراہی میں یمن میں سرگرم باغیوں کی سرکوبی کے لئے جاری فضائی مہم عارضی جنگ بندی کے بعد ایک بار پھر شروع کردی گئی ہیں اور یمن کے جنوبی شہر عدن میں حوثی ملیشیا کے ٹھکانوں پر بمباری کی گئی ہے۔

فوجی حکام اور عینی شاہدین کے مطابق فضائی کارروائیوں کے دوران عدن میں حوثیوں کے زیر تسلط صدارتی محل کے ساتھ ساتھ حوثیوں کی حامی سپیشل فورسز کے اڈے کو بھی نشانہ بنایا گیا۔

ماہ مارچ کے اواخر میں سعودی عرب اور اس کے اتحادیوں نے یمن کے قانونی صدر عبد ربہ منصور ہادی کی حکومت کا تختہ الٹنے کی کوشش کرنے والے شیعہ قبائل کے خلاف فضائی کارروائیوں کا سلسلہ شروع کررکھا ہے تاکہ ان کی پیش قدمی کو روکا جاسکے۔

اس سے پہلے سعودی عرب کی جانب سے انسانی ہمدردی کی بنیاد پر پانچ روز کی جنگ بندی کا آغاز کیا گیا تھا جو کہ اتوار کے روز ختم ہوگئی ہے۔ یہ جنگ بندی عمومی طور پر قائم رہی مگر کچھ مقامات پر باغیوں اور حکومت نواز فورسز کے درمیان لڑائی جاری رہی۔

یمن میں اقوام متحدہ کے نمائندے اسماعیل ولد شیخ احمد نے اتوار کے روز تمام فریقین سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ کم ازکم پانچ مزید دنوں کے لئے جنگ بندی کا اعلان کریں۔