.

مصری طالب عالم کی قاہرہ ٹاور سے کُود کر خودکشی

امریکی یونیورسٹی میں زیر تعلیم متوفی نفسیاتی مسائل سے دوچار تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر میں ایک طالب علم نے دارالحکومت قاہرہ کے مشہور بلند وبالا ٹاور سے کُود کر خود کشی کرلی ہے۔

بیس سالہ طالب علم امریکی یونیورسٹی قاہرہ میں زیر تعلیم تھا۔ابتدائی تفتیش کے مطابق وہ نفسیاتی مسائل سے دوچار تھا۔مصری حکام نے اس کا نام ظاہر نہیں کیا ہے اور یہ بتایا ہے کہ اس نے 187 میٹر بلند قاہرہ ٹاور سے چھلانگ لگا دی تھی اور اس کی انتظامی عمارت پر گر کر ہلاک ہوگیا ہے۔

واضح رہے کہ سنہ 2012ء میں عالمی ادارہ صحت نے مصر کو ان ممالک میں شمار کیا تھا جہاں خودکشی کی شرح انتہائی کم ہے اور یہ شرح ہر ایک لاکھ افراد میں پانچ فی صد سے بھی کم ہے۔

خودکشی کو اسلام میں حرام موت اور گناہ سمجھا جاتا ہے۔اس لیے مصر میں لواحقین خودکشی کو بالعموم حادثاتی موت کے طور پر رجسٹر کراتے ہیں۔اس لیے درست ریکارڈ کی عدم دستیابی کے پیش نظر مصر میں خودکشیوں کے حقیقی اعداد و شمار سامنے نہیں آتے ہیں اور یہ کہنا مشکل ہے کہ مصر میں خودکشیوں کی حقیقی شرح کیا ہے۔