.

' سی آئی اے' چیف کا خفیہ دورہ اسرائیل

دورے کا مقصد تل ابیب کوایران کے ساتھ معاہدے پراعتماد میں لینا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی ذرائع ابلاغ نے اطلاع دی ہے کہ امریکی وفاقی تحقیقاتی ادارے "سی آئی اے" کے چیف جون برینن نے حال ہی میں صہیونی ریاست کا خفیہ دورہ کیا ہے جہاں انہوں نے 30 جون کو چھ عالمی طاقتوں اور ایران کے درمیان طے پانے والے ممکنہ معاہدے کے تناظرمیں بات چیت کی گئی۔

اسرائیل کے عبرانی اخبار "ہارٹز" کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ جون برینن کی آمد کا مقصد تل ابیب کو ایران کے جوہری پروگرام پر ممکنہ معاہدے سے اعتماد میں لینا اور صہیونی ریاست کے اعتراضات دور کرنا تھا۔

اسرائیلی اخبار نے یہ خبرگذشتہ روز اپنی اشاعت میں دی تھی تاہم اسرائیلی وزیراعظم بجمن نیتن یاھو کے ترجمان اور وزارت دفاع کی جانب سے اس حوالے سےکسی قسم کا رد عمل سامنے نہیں آیا ہے۔

تاہم اسرائیلی حکومت کے دو اہم عہدیداروں نے اپنی شناخت ظاہرنہ کرنے کی شرط پربتایا کہ جون برینن تل دورے پرآئے تھے جہاں انہوں نے تیس جون کو ایران اور چھ عالمی طاقتوں کے درمیان تہران کے متنازعہ جوہری پروگرام پرہونے والے حتمی معاہدے کے حوالے سے تل ابیب سے بات چیت کی ہے۔ سی آئی اے چیف اور اسرائیلی عہدیداروں کے درمیان بات چیت میں مشرق وسطیٰ میں ایران کی مبینہ مداخلت پربھی تبادلہ خیال کیا گیا۔

اسرائیلی عہدیداروں کا کہنا ہے کی "سی آئی اے" کے سربراہ نے اسرائیلی خفیہ ادارے "موساد" کے چیف تامیر باروڈ سے بھی ون آن ون ملاقات کی۔ بعد ازاں انہوں نے اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاھو، ملٹری انٹیلی جنس کے سربراہ جنرل ہرٹزل ھالیفی اور قومی سلامتی کمیٹی کے ایڈوائزر یوسی کوھین سے بھی ملاقات کی۔

خیال رہے کہ امریکا کا حلیف ہونے کے باوجود اسرائیل ایران کے متنازعہ جوہری پروگرام کے مغرب کے ساتھ معاہدے کا سخت مخالف ہے۔ اسرائیل کی جانب سے امریکا، روس، فرانس، برطانیہ، چین اور جرمنی کے ساتھ ایران کے مجوزہ جوہری معاہدے پر بار بار کڑی نکتہ چینی کی ہے۔

اسرائیل کی جانب سے نہ صرف ایران کے ساتھ معاہدے کو ناکام بنانے کے لیے عالمی سطح پرسفارتی اور ابلاغی مہم جاری ہے بلکہ صہیونی ریاست کی جانب سے ایران کے خلاف فوجی کارروائی کی بھی دھمکی دی ہے۔

حال ہی میں امریکی فوج کے سربراہ جنرل مارٹن ڈیمپسی نے بھی اسرائیل کا دورہ کیا ہے جہاں انہوں نے وزیراعظم نیتن یاھو، وزیردفاع موشے یعلون اور آرمی چیف جنرل گاڈی آئزن کوٹ سے ملاقات کی۔