.

یمن میں اتحادیوں کی بمباری، حوثی ملیشیا کا اہم کمانڈر ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں اتحادی لڑاکا طیاروں کی بمباری کے نتیجے میں حوثی ملیشیا کے اہم رہنما حامس النمری ہلاک ہو گئے جبکہ دوسری جانب مارب گورنری کے الجدعان محاذ پر عوامی مزاحمتی کمیٹیوں اور مزاحمت کاروں کے درمیان جھڑپوں کے دوبارہ آغاز کی اطلاعات ہیں۔ اتحادی طیاروں نے مارب کے مغربی علاقے میں حوثیوں کے ٹھکانوں پر دو فضائی حملے کئے ہیں۔

ذرائع نے 'العربیہ' کو بتایا کہ ان حملوں میں علی عبداللہ صالح اور حوثی ملیشیا کے 27 جنگجو مارے جا چکے ہیں۔ تعز کے علاقے اتحادی فوجیوں کی ایک کارروائی میں حوثی ملیشیا کا اہم کمانڈر ہلاک اور دسیوں جنگجو زخمی ہوئے۔ ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ ان جھڑپوں میں عوامی مزاحمتی کمیٹیوں کی جانب سے لڑنے والے سات رضاکار بھی کام آئے۔

تفصیل کے مطابق عرب اتحادی فوج کے لڑاکا طیاروں نے حوثی ملیشیا اور علی عبداللہ صالح کے جنگجووں کو نشانہ بنانے کے لئے بمباری کا نیا سلسلہ شروع کیا۔ یمن کے مختلف علاقوں اور محاذوں پر حوثی اور صالح ملیشیا کے جنگجووں اور عوامی مزاحمتی کمیٹیوں کے ارکان کے درمیان لڑائی کی اطلاعات ہیں، جن میں صالح اور حوثی ملیشیا کے متعدد جنگجووں کے ہلاک و زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔

عرب اتحادی فوج کے لڑاکا طیاروں نے یمن کے مختلف محاذوں پر حوثی اور صالح ملیشیا کے ٹھکانوں پر حملے جاری رکھے۔ اتحادی فوج نے مارب میں حوثی ملیشیا کے ٹھکانوں اور تنصیبات کو نشانہ بنایا۔ اتحادی فوج کے لڑاکا طیاروں نے یمن اور سعودی عرب کی سرحد پر واقع حوثیوں کے متعدد ٹھکانوں پر نیچی پروازیں کیں اور اہداف کو نشانہ بنایا۔