.

لیبیا : طرابلس میں آٹھ تیونسی کارکنان اغوا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا کے دارالحکومت طرابلس میں آٹھ تیونسی شہریوں کو اغوا کر لیا گیا ہے۔

تیونس کے سرکاری ریڈیو نے اتوار کو ایک مقامی اہلکار کے حوالے سے ان کے اغوا کی اطلاع دی ہے۔البتہ تیونسی حکام نے فوری طور پر اپنے شہریوں کے اغوا کی تصدیق نہیں کی ہے۔

جمعہ کو مسلح افراد نے طرابلس میں واقع تیونس کے قونصل خانے کے عملے کے دس ارکان کو اغوا کر لیا تھا۔ابھی تک کسی گروپ نے ان کے اغوا کی ذمے داری قبول نہیں کی ہے۔

لیبیا میں سابق مطلق العنان صدر معمر قذافی کی اگست 2011ء میں حکومت کے خاتمے کے بعد سے طوائف الملوکی کا دور دورہ ہے اور اس وقت دو متوازی حکومتیں چل رہی ہیں۔ان حالات میں مسلح گروہ غیر ملکی شہریوں اور سفارت کاروں کو تاوان یا ان کی حکومتوں پر دباؤ ڈالنے کے لیے اغوا کرتے رہتے ہیں۔

گذشتہ سال لیبیا میں اغوا کار گروپوں نے یرغمال بنائے گئے غیرملکی شہریوں کے آبائی ممالک سے رابطہ کیا تھا اور ان سے ان کے ہاں جیلوں میں قید لیبی جنگجوؤں کے بدلے میں ان غیرملکیوں کو رہا کرنے کی پیش کش کی تھی۔