.

کویت مسجد بمبار کے والد کی 'العربیہ' سے خصوصی گفتگو

"بیٹے کی خوفناک حرکت پر نادم باپ کا اصل مجرموں کو سزا دینے کا مطالبہ"

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

گذشتہ جمعہ کو خلیجی ریاست کویت میں اہل تشیع کی جامع مسجد امام جعفر الصادق میں خودکش حملہ کرنے والے بمبار فہد القباع کے والد سلیمان القباع نے بیٹے کی خوفناک حرکت پر گہرے دکھ افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ان کے بیٹے کو دہشت گردی کی طرف جن لوگوں نے مائل کیا ہے انہیں کیفر کردار تک پہنچایا جانا چاہیے۔

نہایت مغموم انداز میں "العربیہ" سے بات چیت کرتے ہوئے سلیمان القباع نے کہا کہ وہ نہیں جانتے کہ ان کے بیٹے کو کب اور کن گناہ گار ہاتھوں نے ایک ایسے اقدام پر تیار کیا جس کا وہ تصور بھی نہیں کر سکتے ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں بمبار فہد القباع کے والد نے کہا کہ میں نے کویت سٹی میں مسجد میں دھماکے اور اس میں فہد کے ملوث ہونے کی خبر ٹی وی پر دیکھی۔ یہ خبر میرے اور پورے خاندان کے لیے ایک بڑے صدمے کا باعث تھی۔ مجھے یقین نہیں آ رہا تھا کہ یہ خبر درست ہو سکتی ہے۔

سلیمان القباع نے بتایا کہ کویت واقعے سے چار دن قبل میری بیٹے سے ملاقات ہوئی۔ اس نے مجھے کہا کہ وہ ماہ صیام کے آخری عشرے میں اعتکاف کرنا چاہتا ہے، لیکن کسی شیطانی ہاتھ نے اسے وہاں سے نکالا اور کویت پہنچا دیا۔ اس کے بعد میں نے بیٹے کو نہیں دیکھا تا آنکہ ٹی وی پر خبر چلی جس میں اس کی لاش خودکش بمبار کے طور پر دکھائی جا رہی تھی۔

ایک سوال کے جواب میں بمبار کے والد نے کہا کہ انہیں کبھی بھی فہد کے بارے میں ذرا بھی شبہ نہیں ہوا کہ وہ کسی شدت پسند یا مشکوک سرگرمی میں ملوث ہے۔ وہ معمول کے مطابق ریاض کے ایک ریستوران میں ملازمت کرتا تھا۔ کچھ عرصہ قبل اس کی شادی ہوئی لیکن چا ماہ بعد میاں بیوی میں علاحدگی ہو گئی تھی۔ شادی کے ابتدائی ایام میں وہ القصیم شہر میں مقیم رہا۔ اس کے بعد وہ دوبارہ ریاض میں والد کے گھر ہی میں منتقل ہو گیا تھا۔

بمبار کے والد سلیمان القباع نے اپنے بیٹے کو دہشت گردی کی طرف مائل کرنے والوں کو بے نقاب کر کے انہیں کیفر کردار تک پہنچانے کا بھی مطالبہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ بیٹے نے کبھی بھی بیرون ملک سفر کا اشارہ تک نہیں دیا۔ وہ ہم سب کا پیارا بیٹا تھا۔ میرے چار بیٹوں میں وہ سب سے بڑا تھا تاہم ایک بیٹی عمر میں اس سے بڑی ہے۔

سلیمان القباع نے کویت مسجد میں خودکش حملے کی شدید مذمت کی اور اس میں بیٹے کے ملوث ہونے پر گہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ فہد القباع کو جرم میں اس کی معاونت کرنے والے ہاتھوں کا پتا چلا کر انہیں بھی کڑی سزا دیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے ملک میں ایسے عناصر در آئے ہیں جو شر، فتنہ اور فساد کے سوا کچھ نہیں جانتے۔ وہ ہماری اولاد کو اپنے راستے پر ڈال کر ان کے ذریعے فتنہ پھیلانے کے اپنے مکروہ عزائم کی تکمیل کرتے ہیں۔