.

بوکو حرام کے حملے میں تقریباً 100 نائجیرین ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بوکو حرام کے شدت پسندوں نے شمال مشرقی نائجیریا کے ایک دور افتادہ قصبے پر حملہ کرکے، تقریباً 100 افراد کو ہلاک کر دیا ہے۔

عینی شاہدین نے بتایا ہے کہ مسلح افراد نے بدھ کی شام گئے کوکاوا کے قصبے میں لیک شاڈ کے قریب دھاوا بولا۔ یہ علاقہ بورنور ریاست میں واقع ہے۔ علاقے سے موصول ہونے والی اطلاعات میں بتایا گیا ہے کہ واقع میں کم از کم 97 افراد ہلاک ہوئے۔

فرانسسی خبر رساں ادارے 'اے ایف پی' کے مطابق، مسلح افراد نے سب سے پہلے ایک مقامی مساجد پر حملہ کیا، پھر گھروں کو نشانہ بنایا۔ واضح رہے کہ صدر محمدو بوہاری کے عہدہ سنبھالنے کے وقت سے ریاستِ بورنو میں حملوں میں تیزی آئی ہے، جس کا الزام بوکو حرام پر عائد کیا جاتا ہے۔

گذشتہ ماہ، صدر نے فوجی کمان کا مرکز ریاست کے دارالحکومت، میدوگری منتقل کیا ہے۔ نائیجیریا، چاڈ، نائیجر، کیمرون اور بینن کے ساتھ بھی بات چیت کر رہا ہے، جس کا مقصد داعش کے شدت پسند گروہ سے نبردآزما ہونے کے لیے علاقائی فورس کا قیام ہے۔

چھ برس سے جاری سرکشی کے دوران، اب تک بوکو حرام نے 10000 سے زائد افراد کو ہلاک کیا ہے، جو شرعی قانون کے نفاذ کے لیے ایک ریاست قائم کرنے کی خواہاں ہے۔