.

یمن کے معاملے میں سعودی عرب کا ساتھ دیں گے: امریکا

'فریقین بات چیت کے ذریعے مسئلے کا حل تلاش کریں'

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا نے یمن کے معاملے پر سعودی عرب کی غیرمتزلزل حمایت اورہر ممکن مدد کی یقین دہانی کرواتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی عرب کو اپنی سرزمین کے دفاع کا بھرپور حق حاصل ہے۔

العربیہ ٹی وی سے بات کرتے ہوئے امریکی وزیر خارجہ کے معاون خصوصی برائے یمن جیرالڈ فائراسٹین نے کہا کہ ہماری تمام ہمدردریاں سعودی عرب اور یمن میں باغیوں کے خلاف آپریشن میں شامل اتحاد کے ساتھ ہیں۔

امریکی عہدیدار نے یمن میں حوثی باغیوں سابق منحرف صدر علی عبداللہ صالح کی حامی ملیشیا کے خلاف جاری "فیصلہ کن طوفان" آپریشن کے ساتھ ساتھ بحالی امید آپریشن کو بھی آگے بڑھانے اور بات چیت کے ذریعے مسئلے کے حل پر زور دیا۔ انہوں نے کہا کہ ہماری تمام مدد اور حمایت سعودی عرب کے ساتھ ہے، لیکن ہم چاہتے ہیں کہ فریقین کم سے کم جانی نقصان کے ذریعے مسئلے کا حل تلاش کریں۔

ایک سوال کے جواب میں جیرالڈ اسٹین کا کہنا تھا کہ سعودی عرب کو اپنی سرزمین کے دفاع کا بھرپور حق حاصل ہے۔ سرحدی شہروں جازان اور نجران پر یمنی باغیوں کے حملوں کا کوئی جواز نہیں ہے۔ اگر سعودی عرب اپنے شہروں پر یمنی باغیوں کے حملوں کے خلاف جوابی کارروائی کرتا ہے تویہ اس کا حق ہے جس میں کوئی دو رائے نہیں ہوسکتیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہم یمن میں انسانی بنیادوں پر جنگ بندی چاہتے ہیں۔ جنگ بندی میں دونوں فریقوں کو حملے روکنا ہوں گے لیکن یہ جنگ بندی باہمی احترام کےاصولوں کے تحت ہونی چاہیے اور اس کی خلاف ورزی نہیں کی جانی چاہیے۔