.

داعش نے مصری کشتی کو نشانہ بنانے کی تصاویر جاری کردیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ عراق وشام "داعش" نے گذشتہ روز رفح کے ساحل کے قریب مصر کی ایک فوجی کشتی کو نشانہ بنانے کی ذمہ داری قبول کرنے کے بعد حملے کی کچھ تصاویر بھی جاری کی ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق داعش کی جانب سے سماجی رابطے کی ویب سائٹ 'ٹویٹر' پر جاری تصاویر کے ساتھ ایک مختصر بیان میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ تنظیم کے جنگجوئوں نے کھلے سمندر میں مصر کی ایک جنگی کشتی کو نشانہ بنایا جس کے نتیجے میں کشتی تباہ اور اس میں سوار عملے کے تمام افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

قبل ازیں مصری فوج کے ترجمان کرنل محمد سمیر نے سمندر میں ایک کشتی پر دہشت گردانہ حملے کی تصدیق کی تھی تاہم ان کا کہنا تھا کہ حملے میں کسی قسم کا جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔ ترجمان کا کہنا تھا کہ دہشت گردوں اور نیوی کے اہلکاروں کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ ہوا ہے۔ دہشت گرد جوابی فائرنگ کے بعد فرار ہوگئے ہیں تاہم ان کا تعاقب جاری ہے۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ نیوی کے اہلکاروں نے فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی سے متصل رفح شہر کے قریب سمندر میں کچھ مشکوک افراد کی نقل وحرکت دیکھی جس کے بعد ان کا تعاقب کیا گیا توانہوں نے کشتی پر فائرنگ کردی تھی، تاہم فائرنگ کے نتیجے میں کسی قسم کا جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔

انہوں نے کہا کہ سیکیورٹی فورسز کے علاقے کو گھیرے میں لے کر مشتبہ دہشت گردوں کی تلاش شروع کردی ہے۔