.

جنرل قاسم سلیمانی پر امریکی پابندیاں برقرار رہیں گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا نے واضح کیا ہے کہ ایرانی پاسداران انقلاب کی ایلیٹ القدس فورس کے سربراہ جنرل قاسم سلیمانی کا نام دہشت گردوں کی فہرست میں برقرار رہے گا۔ ایران کے ساتھ طے پائے معاہدے کے تحت جنرل سلیمانی پر پابندی ختم نہیں کی جائیں گی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق امریکی وزارت خارجہ کی معاون خصوصی برائے سیاسی امور ویندی شرمان نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ پاسداران انقلاب کی بیرون ملک سرگرم تنظیم "فیلق القدس" کے قائد جنرل قاسم سلیمانی پرعاید پابندیاں ختم نہیں کی جائیں گی اور ان کا نام بدستور دہشت گردوں کی فہرست میں شامل رہے گا۔

واضح رہے کہ ویندی شرمان کا نام ایران اور مغرب کے درمیان گذشتہ ہفتے ویانا میں طے پانے والی ڈیل کے بعد پہلی سامنے آیا ہے۔ ایران کے "فردا" ریڈیو کے مطابق مسز شرمان کا کہنا ہے کہ جنرل قاسم سلیمانی پرعاید پابندیاں معاہدے کے دوسرے مرحلے میں کئی سال بعد اٹھائے جانے کا راستہ ہموار ہو سکتا ہے کیونکہ گروپ چھ اور تہران کے درمیان طے پائے معاہدے میں سلیمانی پر پابندیاں برقرار رکھنے پراتفاق کیا گیا ہے۔

ایک سوال کے جواب میں ویندی شرمان کا کہنا تھا کہ ایران کا متنازعہ جوہری پروگرام الگ اور دہشت گردی کی پشت پناہی الگ موضوع ہے اور دونوں کو الگ الگ ہی ڈیل کیا جائے گا۔ جنرل قاسم سلیمانی اور کئی دوسرے عہدیداروں پر دہشت گردی میں معاونت کے الزامات برقرار رہیں گے۔

خیال رہے کہ پاسداران انقلاب کے زیر انتظام "فیلق القدس" نامی تنظیم اور اس کے سربراہ جنرل قاسم سلیمانی پر امریکا نے سنہ 2007ء میں پابندیاں عاید کرتے ہوئے تنظیم کو بلیک لسٹ کر دیا تھا۔ سنہ 2011ء میں یورپی یونین نے بھی جنرل قاسم سلیمانی اور ان کی تنظیم کو دہشت گردی میں معاونت کی پاداش میں پابندیوں میں جکڑ دیا تھا۔