.

سعودی مساجد میں بم دھماکوں کا منصوبہ ناکام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی وزارت داخلہ نے انکشاف کیا ہے کہ سیکیورٹی اداروں کی بروقت کارروائی سے رمضان المبارک کے دوران مملکت کے اندر کم سے کم چار مساجد میں بم دھماکوں کے منصوبے ناکام بنائے گئے۔ ان دھماکوں کی تیاری انتہا پسند تنظیم 'داعش' نے مقامی سہولت کاروں کے ساتھ مل کر تھی۔

وزارت داخلہ کے ہفتے کے روز جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ ریاض میں سپیشل ایمرجنسی فورس کی مسجد میں بارود سے بھری خودکش جیکٹ کے ذریعے دھماکا کرنے کا منصوبہ ناکام بنایا گیا۔ اس دھماکا کی منصوبہ بندی نو رمضان کو کی گئی تھی جس وقت مسجد میں کم سے کم تین ہزار نمازی ایک ساتھ جمع ہونا تھے۔

اعلامیئے کے مطابق مشرقی ریجن میں ہر جمعہ کو ایسے ہی خودکش دھماکوں کی منصوبہ بندی کی گئی تھی۔ اس کارروائی کے ساتھ شاہراوں پر ڈیوٹی دینے والے سیکیورٹی اہلکاروں کو ہدف بنانا بھی داعش کے مجرمانہ ایجنڈے کا اہم نقطہ تھا۔

انہی دہشت گردوں نے متعدد غیر ملکی سفارتخانوں اور سیکیورٹی اہلکاروں کی رہائشی بیرکس کو بھی اپنا ہدف بنانا تھا لیکن سیکیورٹی اہلکاروں کی بروقت کارروائی سے اسے ناکام بنا دیا گیا۔