.

اقوام متحدہ کے امدادی بحری جہاز کی چار ماہ بعد عدن آمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں حوثی باغیوں کے خلاف سعودی عرب کی قیادت میں شروع ہونے والے فوجی آپریشن کے بعد اقوام متحدہ کا ایک امدادی بحری جہاز گذشتہ روز جنوبی یمن کے مرکزی شہر عدن پہنچا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق عدن کے گورنر نایف البکری نے صحافیوں کو بتایا کہ اقوام متحدہ کا ایک امدادی جہاز ساحل سمندر پر پہنچ گیا ہے۔ گذشتہ چار ماہ میں یہ اقوام متحدہ کا یمن پہنچنے والا پہلا امدادی مشن ہے۔

قبل ازیں عدن کے گورنر نے بتایا تھا کہ عدن میں حوثی باغیوں، سابق صدر علی صالح کی حامی ملیشیا اور مزاحمتی کمیٹیوں کے درمیان ہونے والی لڑائی سے حالات بری طرح خراب ہو چکے ہیں تاہم تعمیر نو کا عمل جلد ہی شروع ہو جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ عدن بندرگاہ بین الاقوامی بحری جہازوں لے لنکر انداز ہونے کے لیے تیار ہے جب کہ عدن ہوائی اڈے کو دو روز میں کھول دیا جائے گا۔

عدن گورنر کے سیکرٹری وجدان الشبعیبی نے منگل کے روز بتایا کہ دو امدادی جہاز عدن کے ساحل پر پہنچے ہیں، انہیں الزیت بندرگاہ پہنچانے کا اہتمام کیا جا رہا ہے۔ ایک امدادی جہاز متحدہ عرب امارات کی جانب سے بھیجا گیا ہے جب کہ دوسرا جہاز اقوام متحدہ کی طرف سے آیا ہے جس پر چار لاکھ لیٹر ایندھن لادیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ یمن میں جاری لڑائی کے نتیجے میں غیر ملکی امدادی بحری جہازوں کی آمد کا سلسلہ پچھلے چا ماہ سے معطل تھا۔ عدن کو حوثیوں سے آزاد کرانے کے بعد اقوام متحدہ کی نگرانی میں یہ پہلا بحری جہاز ہے جو عدن پہنچا ہے۔