.

عدن کا ہوائی اڈا دوبارہ کھل گیا، سعودی فوجی طیارے کی آمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے دوسرے بڑے شہر عدن میں بین الاقوامی ہوائی اڈے کو چار ماہ کے بعد دوبارہ پروازوں کے لیے کھول دیا گیا ہے اور سعودی عرب کا ایک فوجی طیارہ بدھ کو اس ہوائی اڈے پرسب سے پہلے اُترا ہے۔

یمن کے ٹرانسپورٹ کے وزیر بدرمحمد باسلمہ نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ''یہ ہوائی اڈے پر سرگرمیوں کا آغاز ہے''۔سعودی عرب کے حمایت یافتہ صدر عبد ربہ منصور ہادی کے وفادار جنگجوؤں اور فوجیوں نے گذشتہ ہفتے حوثی باغیوں اور ان کے اتحادیوں کے ساتھ شدید لڑائی کے بعد اس ہوائی اڈے پر دوبارہ قبضہ کیا تھا۔

العربیہ نیوز چینل کی رپورٹ کے مطابق آج اس سے پہلے ایران کی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا کے سربراہ عبدالملک الحوثی نے اپنے جنگجوؤں کو یمن کے جنوبی شہر ایب سے انخلاء اور شمالی صوبے صعدہ میں واپس جانے کا حکم دیا ہے۔ سعودی عرب کی سرحد کے نزدیک واقع صعدہ حوثی باغیوں کا مضبوط گڑھ ہے۔

ایب میں صدر عبد ربہ منصور ہادی کی وفادار فورسز اور حوثی ملیشیا کے درمیان گذشتہ روز خونریز لڑائی ہوئی ہے جس میں ایک حوثی لیڈر ابو محمد الغائلی مارا گیا ہے۔

یمن کے ان دونوں شہروں میں اس تازہ پیش رفت سے قبل تیسرے بڑے شہر تعز میں جلا وطن صدر کے وفادار جنگجوؤں اور سرکاری فوجیوں نے حوثیوں کے مقابلے میں نمایاں پیش قدمی کی ہے۔تعز میں جنوبی مزاحمت سے تعلق رکھنے والے جنگجوؤں اور حوثیوں کے درمیان گذشتہ کئی روز سے جھڑپیں ہورہی ہیں اور وہاں بھی حوثیوں کو پسپائی کا سامنا ہے۔