.

صومالیہ : ہوٹل کے باہر کار بم دھماکا،13 افراد ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

صومالیہ کے دارالحکومت موغادیشو میں ایک ہوٹل کے باہر کار بم دھماکے میں تیرہ افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔

صومالیہ کی مغرب کی حمایت یافتہ حکومت کے خلاف برسرپیکار اسلامی جنگجو گروپ الشباب نے اس کار بم حملے کی ذمے داری قبول کی ہے اور کہا ہے کہ اس کے جنگجو نے جزیرہ ہوٹل کے باہر بارود سے بھری کار کو دھماکے سے اڑایا ہے۔

عینی شاہدین کے مطابق بم دھماکے کے بعد ہر طرف خون پھیل گیا اور انسانی اعضاء بکھر گئے۔دھماکے سے چار کاریں مکمل طور پر تباہ ہوگئی ہیں۔الشباب کی فوجی کارروائیوں کے ترجمان شیخ عبدالعزیز ابو مصعب نے برطانوی خبررساں ادارے رائیٹرز سے فون کے ذریعے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ''یہ افریقی یونین کی فوج اور صومالی حکومت کی ہیلی کاپٹروں سے بمباری کا ردعمل ہے''۔

صومالی پولیس کے ایک افسر میجر نور اوسوبل نے کہا ہے کہ خودکش بمبار نے اپنی بارود سے بھری کار کو ہوٹل کے گیٹ میں دھماکے سے اڑایا ہے جس سے اس کا سامنے کا حصہ تباہ ہوگیا ہے۔دھماکے کے بعد فائرنگ کی آواز بھی سنی گئی ہے۔جزیرہ ہوٹل کو ماضی میں بھی حملوں میں نشانہ بنایا جاچکا ہے۔

الشباب کے جنگجوؤں نے ہفتے کے روز صومالی دارالحکومت میں دو حملے کیے تھے جن میں ایک رکن پارلیمان،ان کا ایک محافظ اور وزیراعظم کے دفتر میں تعینات ایک افسر ہلاک ہوگئے تھے۔