.

ترکی نے صالح اور حوثی قیادت کے اثاثے منجمد کر دیئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترک خبر رساں ادارے 'اناطولیہ' نے خبر دی ہے کہ انقرہ نے معزول یمنی صدر علی عبداللہ صالح اور حوثی ملیشیا کے رہنماوں کے اثاثے منجمد کر دیئے ہیں۔

حکمنامے کی روشنی میں ترک بینکوں میں کھاتے، وہاں لئے گئے حفاظتی لاکرز اور دیگر اثاثہ جات منجمد کر دیئے گئے ہیں۔ انہیں 16 فروری 2016ء تک جوں کا توں رکھا جائے گا۔

اناطولیہ کے مطابق اس حکمنامے کے بموجب علی عبداللہ صالح، ان کے بیٹے احمد علی عبداللہ صالح، حوثی رہنماوں عبدالمالک الحوثی، عبداللہ یحیی الحکیم اور عبد الخالق الحوثی کو ترکی میں بلیک لسٹ کر دیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ ترکی کے اس فیصلے سے قبل یو این سیکیورٹی کونسل نے متذکرہ بالا پانچوں افراد پر یمن کے امن کو خطرات سے دوچار کرنے کے لئے پابندیاں عاید لگائی تھیں۔