.

اللہ کے گھر کی حرمت پامال کرنے والے مُجرم ہیں: شہزادہ نائف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے ولی عہد اور وزیر داخلہ شہزادہ محمد بن نائف بن عبدالعزیز آل سعود نے کہا ہے مساجد پر حملوں اورمعصوم شہریوں کی جانوں سے کھیلنے والے مجرموں کا کوئی دین ایمان نہیں۔ گمراہ مجرم اپنے مذموم مقاصد کی تکمیل کے لیے اللہ کے گھروں کی بے حرمتی کو بھی خاطر میں نہیں لاتے۔ وہ دین کے ٹھیکدار بن کر لوگوں کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کی کوشش کرتے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق شہزادہ محمد بن نائف نے ان خیالات کا اظہار سوموار کو جدہ میں السلام شاہی محل میں کابینہ کے اجلاس سے خطاب میں کیا۔

اجلاس میں خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی جانب سے عسیر کے مقام پر پولیس کے ایمرجنسی ہیڈ کواٹر کی جامع مسجد میں خود کش حملے میں شہادت کے مرتبے پر فائز ہونے والے سیکیورٹی اہلکاروں کے اہل خانہ سے تعزیت کی اور شہداء کے درجات کی بلندی کے لیے خصوصی دعا کی گئی۔

شہزادہ محمد بن نائف کا کہنا تھا کہ دہشت گردوں اور مجرموں کی انسانیت سے نفرت کا اندازہ اس امر سے لگایا جاسکتا ہے کہ وہ نماز کی ادائی میں مصروف بے گناہ شہریوں کو دھماکوں سے نشانہ بناتے ہیں اور اللہ کے مقدس گھروں کی بے حرمتی اور توہین سے بھی نہیں چوکتے۔ مساجد میں دھماکے کرنا اور نہتے شہریوں کو حملوں کا نشانہ بنانا کسی دین اور اخلاق کے تحت روا نہیں ہے۔ دہشت گردوں کی کارروائیاں قانون نافذ کرنے والے اداروں کے حوصلے پست نہیں کرسکتیں۔ گمراہ فکرکے حامل عناصر خود کو اسلام کے داعی کے طورپر پیش کرتے ہیں لیکن ان کا اسلام سے دور دور تک کا کوئی تعلق بھی نہیں ہے۔