.

ترک فضائیہ کا کردستان ورکرز پارٹی کے 17 اہداف پر حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترک فضائیہ نے پیر اور منگل کی درمیانی رات ملک کے جنوبی مشرقی حصے میں کردستان ورکرز پارٹی کے متعدد ٹھکانوں پر بمباری کی۔ یہ کارروائی، ترک فوج کے بقول، کرد باغیوں سے منسوب کئے جانے والے خونریز حملوں کے جواب میں کی گئی۔ مسلح فوج نے ایک بیان میں بتایا کہ "ھاکاری گورنری میں 17 اہداف کو نشانہ بنایا گیا ہے۔"

پیر کے روز ترکی میں متعدد حملے کئے گئے جن میں سے کردستان ورکرز پارٹی سے منسوب دو حملوں میں 5 پولیس اہلکار اور ایک فوجی ہلاک ہوا جبکہ دائیں بازو کی انتہا پسند تنظیم 'عوامی انقلابی محاذ برائے آزادی' نے استنبول میں امریکی قونصل خانے پر حملے کی ذمہ داری قبول کی۔

ترک مسلح افواج کے مطابق پیر ہی شب جنوبی مشرقی شہر شرناک میں کردستان ورکرز پارٹی کے ٹھکانوں سے چلائی گئی گولی کا نشانہ بن کر ایک سپاہی ہلاک ہوا۔

یاد رہے کہ ترکی نے 24 جون سے 'دہشت گردی کے خلاف جنگ' کا آغاز کر رکھا ہے جس کا ہدف کرد باغی اور شام میں داعش کے جنگجو ہیں۔ انقرہ نے کردستان ورکرز پارٹی کے ٹھکانوں پر حملوں پر توجہ زیادہ مرکوز کر رکھی ہے جبکہ انتہا پسندوں پر صرف تین مرتبہ بمباری کی گئی۔