.

صنعاء میں اماراتی سفارت خانے پر حوثی قابض، 'یو اے ای' کی مذمت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے دارالحکومت صنعاء میں اہل تشیع مسلک کے ایران نواز حوثی باغیوں نے متحدہ عرب امارات کے سفارت خانے پر قبضہ کرلیا ہے۔ دوسری جانب اماراتی وزیر خارجہ نے صنعاء میں سفارت خانے پر حوثیوں کےقبضے کی شدید مذمت کرتے ہوئے سفارت خانے کو فوری طور پر خالی کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

العربیہ چینل کی رپورٹ کے مطابق متحدہ عرب امارات کے وزیرخارجہ نےاپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ صنعاء میں ان کے ملک کے سفارت خانے پر حوثی باغیوں کا قبضہ قابل مذمت اقدام ہے اور یو اے ای اس کاررائی میں ملوث عناصر کے خلاف عالمی سطح پر آئینی چارہ جوئی اور انصاف کے حصول کا حق رکھتا ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ صنعاء میں اماراتی سفارت خانے پر باغیوں کے حملے اور سفارت خانے پرقبضے سے صاف ظاہر ہو رہا ہے کہ حوثی باغی عالمی سفارتی آداب کا احترام کرتے ہیں اور نہ ہی عالمی سفارتی معاہدوں کی پابندی کررہے ہیں۔ ملک میں آئینی حکومت کی عدم موجودگی سے فائدہ اٹھا کر باغیوں نے پورے ملک کو عدم استحکام سے دوچار کررکھا ہے جہاں غیر ملکی سفارتی عملہ بھی محفوظ نہیں رہا ہے۔ بیان میں سفارت خانے پر حملے اور سفارتی عملے کو نکال باہر کرنے کے اقدام کو عالمی قوانین کی کھلی خلاف ورزی قرار دیا گیا۔