.

عمران میں یمن کی حوثی ملیشیا کے 17 رہنما ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کی آئینی حکومت کے بحالی مشن کے لئے سرگرداں عرب اتحادی فوج کے لڑاکا طیاروں نے یمنی شہر تعز اور ارحب میں منتخب حکومت کا تختہ الٹنے والے حوثی باغیوں کے متعدد ٹھکانوں کو نشانہ بنایا ہے۔ نیز عمران گورنری میں معزول صدر عبداللہ صالح کے حامیوں اور حوثی باغیوں کے 17 رہنما بھی علاقے میں ڈھیر کئے گئے۔

اس سے قبل 'العربیہ' ذرائع نے بتایا تھا کہ صالح اور حوثی باغی ایب گورنری سے مکمل طور پر لیس ہو کر تعز کی سمت پیش قدمی کرتے دیکھے گئے۔ عینی شاہدین کے مطابق باغی ملیشیا نے ایب اور تعز کو ملانے والی السیانی شاہراہ کو دوبارہ کھلوا لیا جسے دو دن قبل عوامی مزاحمت کاروں نے بند کر دیا تھا۔

درایں اثنا عوامی مزاحمت کار ذرائع نے بتایا کہ البیضاء شہر کے مکیراس علاقے میں ری پبلکن گارڈز کے 26 بریگیڈ جس کا کنڑول دو روز سرکاری فوج نے حاصل کر لیا تھا، باغیوں نے اس کا کنڑول دوبارہ حاصل کر لیا۔ مزاحمت کاروں اور 26 بریگیڈ کے اہلکاروں کے درمیان شدید لڑائی میں ابتک دسیوں افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔ اہم ٹھکانے کو باغیوں کے قبضے سے آزاد کرانے کے لئے ابین سے مزاحمت کاروں کی تازہ دم کمک بھیجی گئی ہے۔