.

ایران میں 500 کلومیٹر تک مار کرنے والا نیا میزائل تیار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران نے زمین سے زمین پر مار کرنے والا ایک نیا میزائل متعارف کراتے ہوئے اس رائے کا اظہار کیا ہے کہ عسکری قوت امن اور موثر سفارتکاری کی پیشگی شرط ہے۔ تہران وزارت دفاع کے مطابق 'فتح 313' نامی یہ میزائل پانچ کلومیٹر فاصلے تک ہدف کو نشانہ بنانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

میزائل کی رونمائی ایک ایسے وقت ہو رہی ہے جب گذشتہ ماہ ہی ایران اور چھ عالمی طاقتوں کے مابین تہران کے متنازع جوہری پروگرام سے متعلق معاہدہ طے پایا تھا۔ معاہدے کے تحت آئندہ آٹھ سال کے لیے ایران کو بیلسٹک میزائل کی ٹکنالوجی فراہم کرنے پر پابندی ہو گی اور اس کی اجازت اقوام متحدہ کی سکیورٹی کونسل سے رضا مندی سے مشروط ہو گی۔

تاہم ایران کے صدر حسن روحانی کا کہنا ہے کہ ہتھیاروں کی خرید و فروخت سے متعلق انھیں کسی سے اجازت لینے کی ضرورت نہیں۔ میزائل کی رونمائی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں کہا کہ "ہمیں جو بھی ضرورت ہو گی ہم وہ ہتھیار خریدیں گے، بیچیں گے اور بنائیں گے اور اس کے لیے ہم کسی سے اجازت یا کسی قرارداد کی پاسداری نہیں کریں گے۔"

ان کا مزید کہنا تھا کہ "ہم دوسروں ملکوں کے ساتھ اسی صورت میں مذاکرات کر سکتے ہیں جب ہم طاقتور ہوں گے۔ اگر ایک ملک طاقت اور آزادی نہیں رکھتا، وہ حقیقی امن حاصل نہیں کر سکتا۔"

وزیر دفاع کا کہنا تھا کہ اس میزائل کا پہلے ہی کامیاب تجربہ کیا جا چکا ہے اور وسیع پیمانے پر اس کی تیاری جلد شروع کر دی جائے گی۔ ایران کا میزائل پروگرام مشرق وسطیٰ میں سب سے بڑا ہے اور وہ خطے میں اپنے اتحادیوں کو میزائل برآمد کرنے کے علاوہ میزائل شکن نظام درآمد کرنے میں دلچسپی رکھتا ہے۔