.

حوثی ملیشیا کا صنعاء یونیورسٹی پر حملہ، پروفیسر اغوا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں سرگرم حوثی ملیشیاؤں نے دارلحکومت صنعاء کی یونیورسٹی میں ایک مظاہرے کے دوران تنظیم اساتذہ کے سربراہ کو متعدد دوسرے اساتذہ سمیت اغوا کر لیا۔ یمنی دانشوروں کے اغوا کے بدلے انہوں نے دوسرے حوثی قبائل کے پاس یرغمال ڈاکٹر عبدالمجید المخلافی کی رہائی کا مطالبہ کیا ہے، جنہیں حوثیوں نے ان کے بیٹے سمیت چار ماہ قبل اغوا کیا تھا۔

حوثی ملیشیاؤں کے ایک مسلح جھتے نے یونیورسٹی کمیپس پر حملہ کیا۔ اس کارروائی کے دوران انہوں نے اساتذہ اور طلبہ کو تشدد کا نشانہ بنایا۔ اس دوران اساتذہ کے ایک گروپ کو حوثی باغی اغوا کر کے اپنے نامعلوم مقام پر لے گئے۔

ادھر صنعاء یونیورسٹی میں پروفیسروں کی انجمن نے مکمل احتجاج کی کال دیتے ہوئے کیمپس میں مظاہروں کا اعلان کیا۔ یہ مظاہرے ساتھی اساتذہ کی رہائی تک جاری رہیں گے۔

ادھر میدان جنگ سے موصولہ اطلاعات کے مطابق اتحادی فوج کے لڑاکا طیاروں نے الحدیدہ شہر میں حوثی ملیشیا کے زیر قبضہ ملڑی پولیس کے کمپلیکس سمیت ان کی متعدد سیکیورٹی اور فوجی تنصیبات کو نشانہ بنایا۔

اتحادی لڑاکا طیاروں نے ایب گورنری میں بھی باغیوں کے متعدد ٹھکانوں کو نشانہ بنایا۔ اسی اثنا میں تعز شہر کے اندر عوامی مزاحمت کاروں اور حوثی ملیشیا کے جنگجوؤں کے درمیان لڑائی جاری رہنے کی اطلاعات ہیں۔