مصری فنکاروں پر عریاں لباس پہننے پر پابندی لگا دی گئی

شوبز سے وابستہ شخصیات کے لیے نیا ضابطہ اخلاق جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر کی حکومت نے تاریخ میں پہلی بار فن کاروں ، گلو کاروں اور شوبز سے وابستہ افراد کے لیے نیا ضابطہ اخلاق متعین کرتے ہوئے ان کے لیے نیم عریاں اور غیر اخلاقی لباس زیب تن کرنے پر پابندی عاید کردی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق مصر کی میوزک ٹریڈ یونین کے چیئرمین ھانی شاکر کی زیرصدارت اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ فن کاری اور اداکاری کےدوران کوئی بھی فن کار تھیٹر پرغیراخلاقی اور نیم عریاں لباس پہن کرنہیں آئے گا۔ تمام فن کاروں کو کلبوں اور موسیقی کے پروگراموں میں شرکت کرتے ہوئے باوقار لباس زیب تن کرنے کو یقینی بنانا ہوگا۔

اجلاس کے بعد پریس کو جاری ہونے والے ایک بیان میں تمام فن کاروں اور فن کارائوں کو مطلع کیا گیا ہے کہ وہ لباس کے حوالے سے آئندہ اس نئے ضابطہ اخلاق کی سختی سے پابندی کریں۔ خلاف ورزی کرنے والے خلاف انضباطی کارروائی کے ساتھ ساتھ فلموں اور تھیٹر میں حصہ لینے پرپابندی بھی عاید کی جاسکتی ہے۔

میوزک یونین کے چیئرمین کا کہنا ہے کہ نئے ضابطہ اخلاق کا مقصد فن کاروں اور شو بز کے شعبےسے وابستہ افراد کو مصرکی معاشرتی اقدار کا پابند بنانا اور متنازعہ گیٹ اپ اختیار کرنے سے روکنا ہے۔

نئے ضابطہ اخلاق کا تعلق صرف فن کاروں کے باوقار لباس تک محدود نہیں بلکہ شوبز میں کام کرنے والے تمام افراد کو نا مناسب الفاظ اور رکیک فقرہ بازی سے بھی منع کردیا گیا ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ حالیہ کچھ عرصے کے دوران فن کاروں کی جانب سے لباس اور زبان وبیان کے حوالے سے بعض افسوسناک غلطیاں سرزد ہوئی ہیں جومصری سماج اور معاشرتی اقدار کی نفی کرتی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں